Tuesday , October 23 2018
Home / Top Stories / پرانے شہر میں میٹرو ریل چلانے کا پرزور مطالبہ

پرانے شہر میں میٹرو ریل چلانے کا پرزور مطالبہ

مینیجنگ ڈائریکٹر میٹرو ریل سے پرانے شہر کے کانگریس قائدین کی نمائندگی
حیدرآباد۔14 ڈسمبر (سیاست نیوز) پرانے شہر کی نمائندگی کرنے والے کانگریس قائدین کے ایک وفد نے آج میٹرو ریل کے مینیجنگ ڈائریکٹر این وی ایس ریڈی سے ملاقات کی پرانے شہر میں میٹرو ریل نہ چلانے کے سبب عوام کی ناراضگی سے واقف کرایا۔ مذہبی مقامات کو نقصان پہونچائے بغیر پرانے شہر میں بھی میٹرو ریل چلانے کا مطالبہ کیا۔ ریڈی نے وفد کو بتایا کہ مقامی جماعت کا تعاون حاصل نہ ہونے کی وجہ سے پرانے شہر میں میٹرو ریل کا کام شروع نہیں ہوسکا۔ وہ چیف منسٹر کے سی آر سے نمائندگی کرتے ہوئے پرانے شہر میں میٹرو ریل چلانے کی ہر ممکن کوشش کریں گے۔ وفد میں تلنگانہ پردیش کانگریس کے ترجمان جی نرنجن ، سابق سیکریٹری سید یوسف ہاشمی کے علاوہ دوسرے قائدین میں جی کنہیا لعل، پی راجیش، ٹی دھرم چند ، مجاہد، محمد موسیٰ قاسم، اوم پرکاش شرما، کے شیام راؤ مدیراج، آر اشوک ریڈی، کرشنا کمار کے علاوہ دوسرے موجود تھے۔ کانگریس کے وفد نے ریڈی کو بتایا کہ میٹرو ریل چلانے کے معاملے میں بھی پرانے شہر سے سوتیلا سلوک کیا جارہا ہے۔ کانگریس کے دور حکومت میں جب میٹرو ریل شروع کرنے کا فیصلہ کیا گیا تھا۔ اس وقت املی بن سے فلک نما تک میٹرو چلانے کا پلان تیار کیا گیا تھا، حکومت تبدیل ہوتے ہی پلان تبدیل کردینا مناسب نہیں ہے۔ پرانے شہر میں میٹرو ریل نہ چلانے سے عوام میں برہمی پائی جاتی ہے۔ پرانے شہر میں سوائے مجلس کے تمام سیاسی جماعتیں احتجاج کررہی ہیں۔ تمام جماعتوں کے قائدین نے احتجاجی رُخ اختیار کیا ہے۔ ریڈی نے کانگریس کے وفد کو بتایا کہ مقامی جماعت کے منتخب نمائندوں نے پرانے شہر میں میٹرو ریل چلانے میں تعاون نہیں کیا ہے۔ یہاں تک کہ سروے کرنے کا موقع نہیں ملا ہے۔ میٹرو ریل کی تعمیرات میں اہم رول ادا کرنے والی ایل اینڈ ٹی کمپنی نے حصول اراضیات میں مشکلات پیدا ہونے کے بعد کام کو آگے نہیں بڑھایا ہے۔ نئے شہر میں میٹرو ریل توقع سے زیادہ کامیاب ہے۔ پرانے شہر میں بھی میٹرو ریل چلانے کیلئے وہ چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ سے بات چیت کریں گے اور دوبارہ پرانے شہر میں کاموں کے آغازکیلئے ایل اینڈ ٹی کمپنی کو راضی کرایا جائے گا۔

TOPPOPULARRECENT