Saturday , November 25 2017
Home / شہر کی خبریں / پرانے شہر کو چھوٹا پاکستان قرار دینے پر راجہ سنگھ کے خلاف مقدمہ

پرانے شہر کو چھوٹا پاکستان قرار دینے پر راجہ سنگھ کے خلاف مقدمہ

ساوتھ زون پولیس کی از خود کارروائی ، بی جے پی رکن اسمبلی کا بیان نفرت انگیز
حیدرآباد ۔ 13 ۔ مئی : ( سیاست نیوز ) : بی جے پی کے متنازعہ رکن اسمبلی راجہ سنگھ کے خلاف ایک اور مقدمہ درج کرلیا گیا ہے ۔ تاہم اس مرتبہ خود پولیس نے اس رکن اسمبلی کے خلاف کارروائی کی ہے اور پولیس کا کہنا ہے کہ رکن اسمبلی راجہ سنگھ کا بیان ملک کے سسٹم کی توہین کرتا ہے ۔ شہر کے ساوتھ زون میں یہ مقدمہ پولیس نے سوموٹو از خود کارروائی کے تحت درج کرلیا ۔ ڈپٹی کمشنر آف پولیس ساوتھ زون کی خصوصی دلچسپی سے یہ کارروائی کی گئی ۔ ساوتھ زون کے ڈی سی پی مسٹر ستیہ نارائنا نے رکن اسمبلی کے بیان پر سخت برہمی ظاہر کی ۔ جس میں رکن اسمبلی نے پرانے شہر کو منی پاکستان ( چھوٹا پاکستان ) قرار دیا اور خود کی پرائیوٹ آرمی تشکیل دیتے ہوئے مخالفین سے مقابلہ کے لیے نوجوانوں کو تربیت دینے کی بات کہی ۔ یہ بات پولیس نے اپنے بیان میں بتائی ۔ اس خصوص میں ڈی سی پی ساوتھ زون سے بات کرنے پر مسٹر ستیہ نارائنا نے بتایا کہ راجہ سنگھ رکن اسمبلی گوشہ محل کا بیان قابل مذمت ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پرانے شہر کو بدنام کرنے کی کسی بھی کوشش کو برداشت نہیں کیا جاسکتا ۔ انہوں نے کہا کہ پرانے شہر کو منی پاکستان کہنا اس رکن اسمبلی کی ذہنیت کی عکاسی کرتا ہے اور اس کا بیان دونوں فرقوں میں نفرت پیدا کرنے کا باعث ہے ۔ جب کہ پرانے شہر کا امن و بھائی چارہ مثالی ہے ۔ پرانے شہر میں تاریخی بونال کا انعقاد عمل میں لایا جاتا ہے اور گنیش جلوس بہت وسیع پیمانے پر ہوتا ہے ۔ لال دروازہ کے اکنامادنا منادر پرانے شہر میں ہیں ۔ بالاپور کے گنیش جلوس کا گذر پرانے شہر سے ہوتا ہے ۔ اس کے علاوہ دیگر ہمہ مذہبی تہوار سکھوں کا جلوس اور تقاریب ان سب کا تعلق پرانے شہر سے ہے ۔ ایسے میں رکن اسمبلی کا بیان احمقانہ ہے ۔ انہوں نے پرائیوٹ آرمی کی تشکیل کے متعلق کہا کہ ہندوستان میں دستور اور قانون کے رہتے ہوئے کسی کو ایسی خانگی آرمی کی تشکیل کی اجازت نہیں ہوسکتی چونکہ ملک میں باوقار آرمی موجود ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ ایک تلگو نیوز چینل کو دئیے گئے انٹرویو میں رکن اسمبلی گوشہ محل راجہ سنگھ نے جو بیان اور باتیں اپنی انٹرویو میں بتائی ہیں ۔ اس کی بنیاد پر پولیس نے از خود کارروائی کی ہے ۔ اس کے علاوہ پولیس نے ڈی جے ایس کے قائد ایم اے ماجد کے خلاف بھی مقدمہ درج کرلیا ہے ۔ جو اجالے شاہ میں نوجوانوں کو تربیت دیتے ہوئے اشتعال انگیزی کا سبب بن رہے تھے ۔ پولیس نے یہ بات بتائی ۔۔

TOPPOPULARRECENT