Wednesday , January 17 2018
Home / شہر کی خبریں / پرانے شہر کے متعلق بی جے پی رکن کے قابل اعتراض ریمارکس

پرانے شہر کے متعلق بی جے پی رکن کے قابل اعتراض ریمارکس

اسمبلی میں ہنگامہ آرائی ، ڈپٹی چیف منسٹر محمود علی کی مداخلت پر ریمارکس ریکارڈ سے حذف

اسمبلی میں ہنگامہ آرائی ، ڈپٹی چیف منسٹر محمود علی کی مداخلت پر ریمارکس ریکارڈ سے حذف
حیدرآباد ۔ 25 نومبر ۔ ( سیاست نیوز ) بھارتیہ جنتا پارٹی رکن اسمبلی کی جانب سے پرانے شہر کے متعلق قابل اعتراض ریمارکس پر ایوان اسمبلی میں ہنگامہ آرائی شروع ہوگئی ۔ بی جے پی رکن اسمبلی راجہ سنگھ نے آج وقفہ صفر کے دوران دہشت گرد ی کے مسئلے پر تبصرہ کرتے ہوئے پرانے شہر کے تعلق سے بعض ایسے ریمارکس کئے جن سے پرانے شہر کے عوام کی دل آزاری ہوسکتی ہے لیکن فوری طورپر ڈپٹی چیف منسٹر جناب محمد محمود علی کی مداخلت پر کرسی صدارت پر موجود اسپیکر اسمبلی مسٹر مدھو سدن چاری نے ٹی راجہ سنگھ کی جانب سے کئے گئے ریمارکس کو ریکارڈ سے حذف کرنے کا اعلان کیا ۔ ٹی راجہ سنگھ نے دہشت گردی کے واقعات اور بم دھماکوں کا تذکرہ کرتے ہوئے یہ ریمارکس کئے تھے جس پر مجلسی ارکان اسمبلی نے ہنگامہ آرائی کرتے ہوئے اپنی نشستوں سے اُٹھ کھڑے ہوئے ۔ اسی دوران ڈپٹی چیف منسٹر و وزیر مال جناب محمد محمود علی نے مداخلت کرتے ہوئے اسپیکر سے خواہش کی کہ وہ مذکورہ ریمارکس کو ریکارڈ سے حذف کریں اور انھوں نے بی جے پی رکن اسمبلی کو برہمی کے انداز میں مشورہ دیا کہ وہ سڑکوں یا چوراہوں پر کی جانے والی تقاریر کی طرح ایوان میں گفتگو نہ کریں ۔ ایوان کے تقدس کو برقرار رکھنے کی انھوں نے اپیل کی۔ اسی ہنگامہ آرائی کے دوران اسپیکر اسمبلی نے کارروائی کو 10 منٹ کیلئے چائے کے وقفہ کا اعلان کرتے ہوئے ملتوی کردیا ۔

TOPPOPULARRECENT