Thursday , January 18 2018
Home / دنیا / پراگ: نماز کے دوران اسلامی مراکز پر پولیس کا چھاپہ

پراگ: نماز کے دوران اسلامی مراکز پر پولیس کا چھاپہ

پراگ۔ 3 مئی ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) جمہوریہ چیک کے دارلحکومت پراگ میں نماز کے دوران اسلامی مراکز پر پولیس کے چھاپوں کیخلاف مسلمانوں کے ساتھ ساتھ عیسائی رہنمائوں نے بھی حکومت کو تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔ پولیس نے گزشتہ ماہ کی 25تاریخ کو دو چھاپے مارے تھے جن میں ایک انڈونیشین سفارتکار سمیت 20افراد کو گرفتار کرلیا گیا تھا۔ جمہوریہ چیک کے گرفت

پراگ۔ 3 مئی ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) جمہوریہ چیک کے دارلحکومت پراگ میں نماز کے دوران اسلامی مراکز پر پولیس کے چھاپوں کیخلاف مسلمانوں کے ساتھ ساتھ عیسائی رہنمائوں نے بھی حکومت کو تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔ پولیس نے گزشتہ ماہ کی 25تاریخ کو دو چھاپے مارے تھے جن میں ایک انڈونیشین سفارتکار سمیت 20افراد کو گرفتار کرلیا گیا تھا۔ جمہوریہ چیک کے گرفتار ہونے والے 55سالہ شخص پر پولیس نے اشتعال انگیز اسلامی کتاب شائع کرنے کا الزام عائد کیا۔ پولیس کے مطابق مذکورہ کتاب میں نسلی تعصب سے متعلق مواد موجود تھا۔ جمعہ کو جمہوریہ چیک کے کونسل آف چرچز نے اپنے بیان میں چھاپوں کی مذمت کی اور کہا کہ اس اقدام سے مسلمانوں کے بنیادی حقوق کی خلاف ورزی ہوئی ہے۔ کیتھولک پادری ٹامس ہالک نے چھاپوں کو گناہ قرار دیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT