Friday , January 19 2018
Home / شہر کی خبریں / پرنسیس عیسن گرلز اسکول کو ملک ٹاپ 10 میں شمولیت کا اعزاز

پرنسیس عیسن گرلز اسکول کو ملک ٹاپ 10 میں شمولیت کا اعزاز

سالانہ تقاریب کا آغاز ، کمسن طلبہ کا متاثرکن مظاہرہ: محترمہ سلطانہ نذیر الحسن
حیدرآباد۔ 10 جنوری (پریس نوٹ) پرنسیس عیسن گرلز اسکول کی دو روزہ سالانہ تقریب کا پیرنٹس ڈے کے ساتھ آغاز ہوگیا جس میں رومانہ احمد پرنسپال انڈین اسکول آف اکسلینس نے مہمان خصوصی کی حیثیت سے شرکت کی۔ پروگرام کے اختتام کے وقت چیرمین پرنس مفخم جاہ بہادر بھی موجود تھے۔ کمسن طلبہ نے متاثرکن کلچرل پروگرام پیش کئے۔ ڈائریکٹر پرنسیس عیسن گرلز اسکول سلطانہ نذیرالحسن نے بتایا کہ پرنسیس عیسن گرلز اسکول نے اپنی سلور جوبلی مکمل کرکے 26 ویں برس میں قدم رکھا ہے۔ دونوں شہروں حیدرآباد و سکندرآباد ہی نہیں بلکہ یہ ہندوستان کے 125 ٹاپ انٹرنیشنل سی بی ایس ای اور آئی سی ایس ای اسکولس میں ساتویں اور حیدرآباد میں دوسرے نمبر پر رہا ہے۔ اپنے قیام سے لے کر آج تک اس کا معیار تعلیم، ڈسپلین مثالی رہا ہے جس کا کریڈٹ بلاشبہ سرپرست فیڈریشن پرنسیس عیسن مفخم جاہ بہادر اور صدرنشین پرنسس مفخم جاہ بہادر کو جاتا ہے جنہیں اس ادارہ سے شخصی و جذباتی دلچسپی اور لگاؤ رہا ہے۔ نظامیہ حیدرآباد ویمنس اسوسی ایشن ٹرسٹ کے زیراہتمام یہ اسکول قائم کیا گیا ہے جبکہ ٹرسٹ کے تحت پرنسیس عیسن ویمنس ایجوکیشنل سنٹر ، پرنسیس عیسن اسکول آف نرسنگ، پرنسیس عیسن کالج آف نرسنگ، پرنسیس عیسن جونیر کالج، پرنسیس عیسن گرلز ہائی اسکول، نرسری اسکول قائم ہے۔ جل پلی میں وسیع و عریض رقبہ پر پرنسیس عیسن گرلز ہائی اسکول کا سنگ بنیاد رکھا جاچکا ہے۔ عنقریب یہ پراجیکٹ مکمل ہوجائے گا۔ محترمہ نذیرالحسن نے بتایا کہ پرنسیس عیسن گرلز اسکول نے ربع صدی سے اپنے معیار، وقار اور ڈیمانڈ کو برقرار رکھا جو ایک کارنامہ ہی سمجھا جاسکتا ہے۔ مسلم انتظامیہ کے تحت معیاری اسکولس میں دختران قوم کی تعلیم سے دین اور دنیا کی فلاح کا مقصد پورا ہوجاتا ہے، کیونکہ یہاں قرآن فہمی کا درس بھی ہوتا ہے۔ اخلاقیات کے تو خیر ماحول ہی کافی ہے۔ شاہی محل کے حدود میں کمسنی سے تعلیم کے ساتھ دختران قوم اپنے شاندار ماضی سے بھی واقف ہوتی رہتی ہے اور اس ماحول کا بھی ان کے اخلاق، کردار شخصیت پر مثبت اثر ہوتا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ پرنسیس عیسن گرلز اسکول کی فارغ التحصیل طالبات پروفیشنل کورسیس میں بھی میرٹ میں کامیاب ہورہی ہیں۔ آج ہر شعبہ حیات میں وہ اپنے وجود کا احساس دلا رہی ہیں۔ سلطانہ نذیرالحسن نے بتایا کہ پرنس مفخم جاہ بہادر کی خصوصی ہدایات ہیں کہ ہر کلاس میں ٹیچر اور اسٹوڈنٹس کے درمیان اتنا ہی تناسب ہونا چاہئے جس سے ہر ٹیچر، ہر ایک طالب علم پر شخصی توجہ دے سکے۔ طالبات کے ساتھ ساتھ والدین اور سرپرستوں کی کونسلنگ، ان کے ساتھ مشاورت کو اہمیت دی جاتی ہے۔ پرانے شہر حیدرآباد میں یہ اسکول ایک نعمت ہے۔ خاندان آصفیہ کا عوام کو تحفہ ہے۔ انہوں نے بتایا کہ غریب اور متوسط طبقہ کی طالبات کے لئے اسکالرشپس ہے۔ گزشتہ سال 28 لاکھ روپئے بطور اسکالرشپس تقسیم کی گئی۔ اسکول کے ٹرسٹیز کی حیثیت سے بیگم انیس خان، سید انیس حسین، واجد علی کامل ایڈوکیٹ اور محترمہ ماہ پارہ علی خدمات انجام دے رہی ہیں۔ پرنسیس عیسن گرلز ہائی اسکول کے سالانہ جلسہ کا دوسرا پروگرام آج سہ پہر 3 بجے منعقد ہوا جس میں پرنسپال سینٹ مارٹن اسکول ڈاکٹر میگھاسین مہمان خصوصی تھیں۔ آخری پروگرام 11 جنوری کو صبح 10 بجے منعقد ہوگا جس میں ٹرسٹی مہ پارہ علی، بیگم انیس خان، انیس الدین شرکت کریں گے۔

TOPPOPULARRECENT