Saturday , October 20 2018
Home / Top Stories / پروبائیوٹیک مشروبات کا ہندوستان میں نیاچلن ‘ مگر یہ کیامجموعی طور پر بہتر ہیں؟

پروبائیوٹیک مشروبات کا ہندوستان میں نیاچلن ‘ مگر یہ کیامجموعی طور پر بہتر ہیں؟

صحت مند مشروبات کااستعمال ان دونوں نیا رحجان بنا ہوا ہے۔ہضیمہ کی بڑھتی شکایتوں کے پیش نظر صحت بخش مشروبات تیزی کے ساتھ مارکٹ میں پھیل رہی ہیں۔

پروبائیوٹیک مشروبات جو حال تک محدود تھے ‘اب ہندوستان کی مارکٹ میں سیلاب کی شکل میں پھیل گئی ہیں۔ہر سوپر مارکٹ کے فریج میںیہ مصنوعات موجود ہیں جو ’’ اچھادوستانہ‘‘ کھانے کے طور پر پہچانا جاتا ہے۔

ایک اندازے کے مطابق پندرہ ملین روپئے کی مارکٹ میں ہندوستان ڈائری مصنوعات کی مارکٹ میں دنیا کا تیزی کے ساتھ فروغ پانے والا ملک بن رہا ہے۔

اگرچہ کہ اعدادوشمار میں غیریقینی لگاتا ہے مگر مان لیاجائے کہ بین الاقوامی سطح پر پرو بائیوٹیک 14ملین ڈالر کی انڈسٹری ہے اور اب شہری حصوں میں پروبائیوٹیک تیزی رفتار پکڑ چکا ہے واور پربائیو ٹیک مشروبات اور کھانے دھیرے دھیرے مارکٹ کا ضروری حصہ بن رہے ہیں۔

ورلڈ ہلت آرگنائزیشن ( ڈبیلو ایچ او) پروبائیوٹیک کو زندہ مائیکرو ارگنیزم قراردیا ہے جو ہلت کے لئے فائدہ مند ثابت ہوا ہے۔

گڈ مائیکربائیوٹیک اور پروبائیوٹیک سائنس فاونڈیشن ہندوستان کی سکریٹری نیراجہ ہاجیلا کہتی ہیں کہ پروبائیوٹیک اہمیت کا حامل اس لئے ہوا ہے کیونکہ اس سے آنتیں کے فائدہ مند ثابت ہوا ہے۔

انہوں نے کہاہے کہ’’ انتیں بہت زیادہ نظر انداز کئے جانے والے عضو ہیں جبکہ صحت کا تمام درامدار ان ہی پر ہے‘‘۔

ہاجیلا کے مطابق جو کھانا ہم کھاتے ہیں وہ یہاں پر ہضم ہوتا ہے اور تغذایہ بخش اجز جذب ہوجاتے ہیں۔انہوں نے کہاکہ ’’ اس کے علاوہ انتیں بیشتر مدافعاتی خلیات کو انسانی جسم کے اندر رکھتی ہیں اوربڑے عضو ہمیں بیماروں سے محفوظ رکھتے ہیں۔

مذکورہ مائیکروبس فائدہ مند اور نقصاندہ دونوں ہوتے ہیں اور پھر بھی توازن اہم ہے۔پروبائیوٹیکس توازن برقرار رکھنے میں مدد کرتا ہے‘‘۔

مارکٹ میں پروبائیوٹیک مشروبات اور کھانے کے بڑے کھلاڑی کے طو رپر یاکولٹ‘ نیسلے‘ امول‘ مدرڈائری اور چھوٹے ادارے جو یوگورٹ‘ دودھ ‘ ائسکریم او ریہاں تک کے چائے کے زمرے میں پیش کئے جارہے ہیں۔

جاپان کے یاکولٹ اور فرانس فوڈ کمپنی ڈانونی کے درمیان ففٹی ففٹی وینچریوکولٹ ڈانونی کی کامیابی کے بعد مذکورہ کمپنی 65ایم ایل پر مشتمل یومیہ اساس پر280,000بوتلیں کی پیدوار کررہی ہیں اور اس کی تیاری کا مرکز سونی پت ( ہریانہ) میں قائم کیاگیا ہے۔یاکوٹ کے بانی ڈاکڈر میورو شیروٹا لمبی عمر کے لئے حفاظتی ادویات اور صحت مند آنتوں کی وکالت کرتے ہیں اور ان کی تحقیقی سرگرمیاں اسی پر منحصر ہیں

TOPPOPULARRECENT