Wednesday , December 19 2018

پروین طلحہ، پہلی مسلم خاتون بیورو کریٹ جنہیں پدم شری سے نوازا گیا

لکھنؤ ۔ 27 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) صدرجمہوریہ ہند پرنب مکرجی نے اس سال جن لوگوں کو پدم شری کے اعزاز سے نوازا ہے ان میں لکھنؤ کی مسلم بیورو کریٹ کلاس I افسر پروین طلحہ کا نام بھی شامل ہے۔ پروین طلحہ کا تعلق لکھنؤ کے علمی خانوادے سے ہے۔ یوں تو ان کا آبائی وطن قصبہ باون (ہردوئی) ہے لیکن ایک مدت ہوئے ان کا خاندان لکھنؤ منتقل ہوگیا اور لکھنؤ ایک

لکھنؤ ۔ 27 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) صدرجمہوریہ ہند پرنب مکرجی نے اس سال جن لوگوں کو پدم شری کے اعزاز سے نوازا ہے ان میں لکھنؤ کی مسلم بیورو کریٹ کلاس I افسر پروین طلحہ کا نام بھی شامل ہے۔ پروین طلحہ کا تعلق لکھنؤ کے علمی خانوادے سے ہے۔ یوں تو ان کا آبائی وطن قصبہ باون (ہردوئی) ہے لیکن ایک مدت ہوئے ان کا خاندان لکھنؤ منتقل ہوگیا اور لکھنؤ ایک طرح سے ان کا آبائی وطن ہوگیا۔ پروین طلحہ کے والد محمد طلحہ ایڈوکیٹ کا شمار شہر کے کامیاب وکلاء میں ہوتا تھا۔ محمد طلحہ ایڈوکیٹ نے اپنی بڑی بیٹی پروین طلحہ کو اس وقت لکھنؤ کے مشہور مشنری اسکول لاریٹو کانونٹ اسکول میں داخل کردیا جب عموماً مسلم لڑکیوں کو اسکول کی تعلیم سے دور رکھا جاتا تھا۔ انگریزی اسکول میں کسی مسلم لڑکی کو پڑھانا گویا مسلم سماج سے بغاوت کے مترادف تھا۔ محمد طلحہ ایڈوکیٹ نے اس کی قطعی پرواہ نہ کرتے ہوئے اپنی ہونہار بیٹی پروین طلحہ کو لکھنؤ کے بہترین کانونٹ اسکول میں تعلیم دلائی۔ پروین طلحہ نے اپنے علمی خانوادے کی روایت کو برقرار رکھتے ہوئے لارنیو کانونٹ سے ہائی اسکول کا امتحان اچھے نمبر سے پاس کیا۔

TOPPOPULARRECENT