Sunday , July 22 2018
Home / Top Stories / پلواما انکاؤنٹر میں جیش سربراہ اظہر مسعود کا بھتیجہ ہلاک

پلواما انکاؤنٹر میں جیش سربراہ اظہر مسعود کا بھتیجہ ہلاک

Indian army soldiers patrol near the site of a gunbattle at Saimoh village, in Tral area, about 45 Kilometres south of Srinagar, Indian controlled Kashmir, Saturday, May 27, 2017. Rebel leader Sabzar Ahmed Bhat and a fellow militant were killed after troops cordoned off the southern Tral area overnight following a tip that rebels were hiding there, police said. The gunbattle ended later Saturday and soldiers recovered the bodies of two militants. (AP Photo/Dar Yasin)

دو اے کے 47 رائفلس کے ساتھ پہلی مرتبہ ، امریکی ساختہ رائفل بھی دستیاب
سرینگر 7 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) جموں و کشمیر کے علاقہ پلواما میں گزشتہ رات ہوئے انکاؤنٹر میں ہلاک دو بیرونی عسکریت پسندوں میں سمجھا جاتا ہے کہ جیش محمد کے سربراہ مولانا مسعود اظہر کا ایک بھتیجہ بھی شامل ہے۔ اس دوران سکیورٹی فورسیس کو پہلی مرتبہ ایک امریکی ساختہ M4 رائفل بھی دستیاب ہوئی جو انکاؤنٹر کے مقام پر پڑی ہوئی پائی گئی۔ پولیس کے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ ’’سمجھا جاتا ہے کہ طلحہ رشید جو تین مہلوک عسکریت پسندوں میں شامل ہے، جیش محمد کے سربراہ مسعود اظہر کا بھتیجہ ہے۔ وہ پلواما میں اگلار کے قریب ایک انکاؤنٹر میں سکیورٹی فورسیس کے ہاتھوں مارا گیا تھا‘‘۔ وکٹر فورسیس کے جنرل آفیسر کمانڈنگ میجر جنرل بی ایس راجو نے کہاکہ بشمول دو بیرونی عسکریت پسند تین مہلوکین میں اظہر کا بھتیجہ شامل ہونے کی اطلاعات ہیں۔ علاقہ اگلار میں کل رات ہوئی گھمسان لڑائی میں تین عسکریت پسند اور ایک فوجی سپاہی ہلاک ہوگئے تھے۔ دو AK47 رائفلوں کے علاوہ سکیورٹی فورسیس کو ایک M4 رائفل بھی دستیاب ہوئی۔ یہ وہی ہتھیار ہے جو امریکی فوج عراق اور افغانستان میں اپنی جنگوں کے دوران اکثر استعمال کیا کرتی تھی۔ انسپکٹر جنرل پولیس (کشمیر) منیر خان نے کہاکہ جیش محمد کے سربراہ کے بھتیجہ کی ہلاکت کی تحقیقات کے علاوہ اس بات کا پتہ بھی چلایا جائے گا کہ امریکی ساختہ M4 رائفل کس راستہ سے کشمیر پہونچ سکی۔ منیر خان نے کہاکہ ’’میں شکر گذار ہوں کہ اُنھوں (جیش) نے پہلی مرتبہ کسی (مہلوک) پاکستانی عسکریت پسند کو اپنا قرار دیا ہے۔ اب میں ان سے درخواست کرتا ہوں کہ وہ اس کی نعش پر بھی اپنا ادعا پیش کریں‘‘۔ جیش کا بانی مولانا مسعود اظہر ان تین عسکریت پسندوں میں شامل ہے جس کو 1999 ء میں انڈین ایرلائنس کے ایک طیارہ کے کٹھمنڈو سے ہائی جیک کرتے ہوئے یرغمال بنائے گئے مسافرین کے عوض رہا کیا گیا تھا۔ انکاؤنٹر میں اظہر مسعود کے بھتیجہ کی ہلاکت کے خلاف وادی کشمیر میں آج احتجاجی مظاہرے کئے گئے۔ (خبر صفحہ 5 پر)

TOPPOPULARRECENT