Thursday , November 23 2017
Home / ہندوستان / پلیٹ گنس کے بجائے ربر کی گولیوں کا استعمال زیرغور

پلیٹ گنس کے بجائے ربر کی گولیوں کا استعمال زیرغور

نئی دہلی ۔ 10 اپریل ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) مرکزی حکومت سے آج سپریم کورٹ نے کہاکہ وہ بے قابو ہجوم پر قابو پانے کیلئے متبادل طریقوں پر غور کررہی ہے ۔ پلیٹ گنس کی بجائے ربر کی گولیاں استعمال کی جاسکتی ہیں، جو پلیٹ گنس کی طرح مہلک نہیں ہوں گی ۔ وادی کشمیر میں تشدد کے خاتمہ کیلئے پلیٹ گنس کا استعمال آخری صورتحال میں کیا جاسکتا ہے ۔ اٹارنی جنرل مکل روہتگی نے کہاکہ مرکزی حکومت متبادل طریقوں کا جائزہ لے چکی ہے تاکہ انھیں پلیٹ گنس کی بجائے استعمال کیا جائے ۔ جیسے پانی کی بوچھار ، لیزر کی شعاعوں کے ذریعہ آنکھیں چکا چوند کردینا ، مرچ کا سفوف ، پاوا شلس لیکن یہ متبادل طریقے کامیاب ثابت نہیں ہوئے ۔ قبل ازیں سپریم کورٹ نے اسے انتہائی اہم مسئلہ قرار دیا تھااور کہاتھا کہ پلیٹ گنس کے استعمال سے کئی مسائل اٹھ کھڑے ہورہے ہیں ۔ سپریم کورٹ نے جموںو کشمیر ہائیکورٹ بار اسوسی ایشن سرینگر کو انتباہ دیا کہ وہ پلیٹ گنس کے استعمال پر امتناع عائد کرنے کی درخواست کرتے ہوئے معاملے کو سیاسی رنگ دے رہی ہے ۔ عدالت نے کہاکہ بار اسوسی ایشن کو غیرجانبدار رہنا چاہئے ، اسے احتجاجیوں یا فوج دونوں میں سے کسی کی بھی تائید نہیں کرنی چاہئے ۔ سپریم کورٹ نے مرکزی حکومت سے پرتشدد ہجوم کو منتشر کرنے کیلئے دیگر حکمت عملیوں کے بارے میں ایک رپورٹ طلب کی ۔ قبل ازیں اقوام متحدہ نے پانی کی بوچھار استعمال کرنے کی منظوری دی تھی جو ایک غیرمہلک طریقہ ہے ۔ اس میں بدبودار سیال مادہ استعمال کیا جاتا ہے ۔ یہ سیال مادہ اسرائیل کا تیار کردہ ہے ۔ چیف جسٹس آف انڈیا جسٹس جے ایس کیہر کی زیرصدارت بنچ نے کہا کہ نئے معیاری عملی طریقے استعمال کریں ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT