Saturday , January 20 2018
Home / شہر کی خبریں / پنالہ لکشمیا کا پتلہ نذر آتش کرنے کی شدید مخالفت

پنالہ لکشمیا کا پتلہ نذر آتش کرنے کی شدید مخالفت

بعض اقلیتی قائدین کے احتجاج پر اعتراض، محمد سراج الدین کا بیان

بعض اقلیتی قائدین کے احتجاج پر اعتراض، محمد سراج الدین کا بیان
حیدرآباد /12 اگست (سیاست نیوز) صدر پردیش کانگریس اقلیت ڈپارٹمنٹ محمد سراج الدین نے کانگریس کے چند اقلیتی قائدین کی جانب سے گاندھی بھون میں پنالہ لکشمیا کا پتلہ نذر آتش کرنے کی سخت مذمت کی۔ آج گاندھی بھون میں ایک پریس کانفرنس کا اہتمام کرتے ہوئے انھوں نے یہ بات کہی۔ اس موقع پر پردیش کانگریس اقلیت ڈپارٹمنٹ کے نائب صدر میر ہادی علی اور کانگریس کے سینئر قائد شیخ عبد اللہ سہیل بھی موجود تھے۔ انھوں نے کہا کہ جن لوگوں نے صدر پردیش کانگریس کا پتلہ نذر آتش کیا ہے، ان کا کانگریس سے کوئی تعلق نہیں ہے، ایسے لوگوں کی خدمات کرائے پر حاصل کی گئی ہیں۔ انھوں نے کہا کہ محمد فرید الدین اے آئی سی سی کے رکن ہیں، لہذا ان کی معطلی میں پنالہ لکشمیا کا کوئی رول نہیں ہے، جب کہ ہائی کمان نے حلقہ اسمبلی ظہیرآباد کے کانگریس قائدین کی شکایات کا جائزہ لیتے ہوئے انھیں معطل کیا ہے، جس پر مذاکرات کی گنجائش ابھی باقی ہے۔ انھوں نے کہا کہ فرید الدین اس مسئلہ پر پارٹی قیادت سے بات چیت کرسکتے تھے، تاہم ان کے حامیوں کی حرکت قابل مذمت ہے۔ واضح رہے کہ محمد فرید الدین پر یہ الزامات ہیں کہ وہ حلقہ اسمبلی ظہیرآباد اور ضلع میدک کے پارٹی اجلاسوں میں شریک نہیں ہوتے۔ انھوں نے 2014ء کے عام انتخابات میں پارٹی کی مخالفت میں کام کیا، علاوہ ازیں مقامی اداروں و بلدیات کے لئے منتخب ہونے والے قائدین کو ٹی آر ایس میں شمولیت کی ترغیب دی۔ ان پر یہ بھی الزام ہے کہ انھوں نے گاندھی بھون میں منعقدہ کانگریس کی افطار پارٹی میں شرکت نہیں کی، جب کہ ظہیرآباد بلدیہ میں منعقدہ ٹی آر ایس کی افطار پارٹی میں شرکت کی، لہذا ان تمام پہلوؤں کا جائزہ لینے کے بعد کانگریس ہائی کمان نے ان کی معطلی کا فیصلہ کیا۔ محمد سراج الدین نے کہا کہ پارٹی میں احتجاج اور پتلے نذر آتش کرنے کی کوئی گنجائش نہیں ہے۔ انھوں نے کہا کہ اقلیتیں بالخصوص مسلمان نازک حالات سے گزر رہے ہیں، ایسے میں مسلمانوں کو ذمہ دارانہ رول ادا کرنے اور کانگریس کو مستحکم کرکے فرقہ پرست طاقتوں کو کمزور کرنے کی ضرورت ہے۔

TOPPOPULARRECENT