Wednesday , November 22 2017
Home / ہندوستان / پنجاب میں مقدس کتاب کی بیحرمتی کا معمہ حل

پنجاب میں مقدس کتاب کی بیحرمتی کا معمہ حل

دو گرنتھی اور ایک خاتون گرفتار ، عوام میں برہمی، بند اور احتجاج
چندی گڑھ ۔ 19 ۔ اکتوبر (سیاست ڈاٹ کام) پنجاب میں سکھوں کی مقدس کتاب کی بے حرمتی واقعہ میں 2 گرنتھیوں اور ایک خاتون کو گرفتار کرلیا گیا جبکہ اس واقعہ کے خلاف مختلف تنظیموں کے کارکن احتجاج کرتے ہوئے سڑکوں پر نکل آئے تھے ۔ پولیس نے ضلع امرتسر کے پنجا پورہ گاؤں میں ایک گردوارہ کے گرنتھی کو شر انگیز حرکت پر گرفتار کرلیا گیا جبکہ ضلع لدھیانہ میں گھواڈی دیہات سے ایک جاروب کش خاتون، ایک گرنتھی کو حراست میں لے لیا گیا۔ امرتسر کے سینئر پولیس سپرنٹنڈنٹ (رورل) مسٹر جئے دیپ سنگھ ساشی نے بتایا کہ پنجا پورہ گاؤں میں ایک گردوارہ کے ایک پیشوا نے کل شب پولیس کو ٹیلیفون پر اطلاع دی کہ 3 افراد زبردستی یہاں داخل ہوکر مقدس کتاب کے اوراق پھاڈ رہے ہیں لیکن پولیس نے جب گردوارہ کے دوسرے افراد کے روبرو پیشوا سے پوچھ تاچھ کی تو یہ اطلاع جھوٹی ثابت ہوئی لیکن اس شر انگیز حرکت پر پیشوا (گرنتھی) گرفتار کرلیا گیا۔30 سال گرنتھی جگدیپ سنگھ نے یہ اقبال جرم کرلیا کہ عوام کو گمراہ کرنے کیلئے یہ حرکت کی ہے ۔ ایک اور کیس میں پولیس نے ایک 45 سالہ خاتون بلویندر کور اور 46 سالہ گرنتھی سکندر سنگھ کو گھواڈی بے حرمتی کیس میں گرفتار کرلیا گیا۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT