Thursday , September 20 2018
Home / شہر کی خبریں / پنجاب نیشنل بینک کی دھوکہ دہی پر سوشیل میڈیا میں مذاق کا موضوع

پنجاب نیشنل بینک کی دھوکہ دہی پر سوشیل میڈیا میں مذاق کا موضوع

نیروو مودی سے 20 ہزار کروڑ واپس لانے سے متعلق استفسار کا انبار

حیدرآباد۔18فروری(سیا ست نیوز) پنجاب نیشنل بینک میں ہوئی دھوکہ دہی پر سوشل میڈیا میں دھوم مچی ہوئی ہے اور مختلف طریقوں سے اس دھوکہ دہی کی بناء پر حکومت کا مذاق اڑایا جا رہا ہے اور کہا جا رہاہے کہ حکومت نیروو مودی کے معاملہ میں کچھ نہیں کرپائی اور نہ کرپائے گی بلکہ حکومت کی جانب سے نیروو مودی کو محفوظ راستہ فراہم کیا جائے گا لیکن کیا 20ہزار کروڑ کی عوامی دولت کو لوٹنے والے نیروو مودی کی دولت واپس لائی جائے گی؟ یہ ایک انتہائی اہم سوال بنا ہوا ہے۔ پنجاب نیشنل بینک اسکام کے متعلق بنائے جانے والے لطیفوں میں سب سے اہم ’چھوٹا مودی‘ بڑا مودی‘ بنا ہوا ہے اور سوشل میڈیا اس مسئلہ پر بحث و مباحث میں مصروف ہے لیکن ’’مودی بھکت‘‘ اس معاملہ میں نہ چھوٹے کا دفاع کرتے نظر آرہے ہیں اور نہ ہی بڑے کا دفاع کر رہے ہیں ۔ سابق آئی پی ایس عہدیدار سنجیو بھٹ نے اسکام کے سلسلہ میں ٹوئیٹ کرتے ہوئے کہا کہ معاملہ کے متعلق سب گجراتی ہیں انہوں نے تفصیلی ٹوئیٹ میں کہا کہ لٹیرا گجراتی‘ تحقیقات کرنے والا گجراتی ‘ وزیر اعظم گجراتی ‘ فینانس سیکریٹری گجراتی‘ صدرنشین منصوبہ بندی کمیشن گجراتی‘ گورنر آر بی آئی گجراتی اور سب نے مل کر بینک لوٹی پنجابی اسی طرح راہول گاندھی نے بھی اپنے ٹوئیٹر کے ذریعہ NaMoاورNiMoکا فارمولہ ٹوئیٹ کرتے ہوئے لکھا ہے کہ LaMo+NiMo–NaMo (Bha-Go) انہوںنے اپنے اس ٹوئیٹ کے ذریعہ نہ صرف نریندر مودی کو نشانہ بنایا بلکہ ان کے ساتھ ساتھ للت مودی اور نیروو مودی کو بھی نشانہ بنایا۔اس کے علاوہ گذشتہ دو یوم سے پنجاب نیشنل بینک میں صارفین کی سہولت کیلئے رکھی گئی پین جو کہ 2تا5روپئے کی ہوگی اور اسے باندھ کر رکھا گیا ہے اس کا بھی یہ کہتے ہوئے مضحکہ اڑایا جا رہاہے کہ 20ہزار کروڑ گنوانے کے بعد پنجاب نیشنل بینک نے احتیاطی اقدامات شروع کردیئے ہیں۔اسی طرح فیس بک اور دیگر سوشل میڈیا پلیٹ فارمس پر بھی ہندستانی شہری اپنی حس مزاح کے ذریعہ پنجاب نیشنل بینک ‘ حکومت اور وزیر اعظم کو تنقید کا نشانہ بنا رہے ہیں۔ نیروو مودی داؤس میں نریندر مودی کے ساتھ تصویر کشی پر بھی کئی سوالیہ نشان لگائے جانے لگے ہیں اور کہا جار ہاہے کہ جس شخص کے خلاف تحقیقات جاری ہیں وہ وزیر اعظم کے ساتھ کیا کر رہا تھا اور کس طرح اسے ورلڈ اکنامک فورم کے دوران وزیر اعظم سے ملاقات کا موقع دیا گیا یہ بات بھی موضوع بحث بنی ہوئی ہے۔

TOPPOPULARRECENT