Wednesday , January 17 2018
Home / کھیل کی خبریں / پنجاب کے خلاف جارحانہ کھیل اور برتری کیلئے کولکتہ کی کوشش

پنجاب کے خلاف جارحانہ کھیل اور برتری کیلئے کولکتہ کی کوشش

پونے ۔17 اپریل ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) انڈین پریمیئر لیگ کے آئندہ میچ میں کولکتہ نائٹ رائیڈرس ( کے کے آر ) اور کنگس XI پنجاب کے درمیان پونے اسٹڈیم میں ہفتہ کو سنسنی خیز مقابلہ ہوگا ۔ دفاعی چمپیئنس کے کے آر رواں مہم میں ایک غیریقینی شروعات کے باوجود دوبارہ کامیابی کے راستہ پر واپسی کو یقینی بنانے کی کوشش کریں گے۔اگرچہ ان کا مقابلہ کنگس الیون

پونے ۔17 اپریل ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) انڈین پریمیئر لیگ کے آئندہ میچ میں کولکتہ نائٹ رائیڈرس ( کے کے آر ) اور کنگس XI پنجاب کے درمیان پونے اسٹڈیم میں ہفتہ کو سنسنی خیز مقابلہ ہوگا ۔ دفاعی چمپیئنس کے کے آر رواں مہم میں ایک غیریقینی شروعات کے باوجود دوبارہ کامیابی کے راستہ پر واپسی کو یقینی بنانے کی کوشش کریں گے۔اگرچہ ان کا مقابلہ کنگس الیون پنجاب جیسی خطرناک ٹیم سے ہوگا ۔ گوتم گمبھیر کی قیادت میں کے کے آر ٹی 20 ٹورنمنٹ میں تاحال ملے جلے کھیل کا مظاہرہ کرسکی ہے ۔ اب تک کھیلے گئے دو میچوں کے منجملہ اس کو ایک میں کامیابی اور دوسرے میں شکست ہوئی ہے ۔ ممبئی انڈینس کو سات وکٹس سے بدترین شکست دینے والی کے کے آر نے گزشتہ میچ میں رائیل چیلنجرس بنگلور کے ہاتھوں شکست بھی اُٹھائی۔ چنانچہ یہ ٹیم ( کے کے آر ) کل قدرے بہتر کھیل کا مظاہرہ کرتے ہوئے کامیابی کی ڈگر پر دوبارہ واپسی کو یقینی بنانے کی کوشش کرسکتی ہے ۔ کے کے آر کی بیٹنگ گزشتہ دونوں میچوں میں مضبوط و مستحکم رہی اور وہ ہر میچ میں اوسطاً 170 رن بناسکی ۔ کپتان گمبھیر بھی اپنی بیٹنگ کے بہترین فارم میں ہیں جو نصف سنچریاں بناچکے ہیں۔ منیش پانڈے ، سوریہ کمار یادو ، رابن اتھپا اور آندرے رسل بھی اس ٹیم کیلئے خاطر خواہ رن بنارہے ہیں۔ لیکن کے کے آر کی بدستور تشویش کا سبب بولنگ بنی ہوئی ہے ۔ مورنی مورکل ، سنیل نرائن ، یوسف پٹھان ، شکیب الحسن اور پیوش چاؤلہ جیسے بولرس کو اپنی ٹیم کے کاز میں زائد ذمہ داری نبھانی ہوگی ۔

نرائن گرچہ دونوں میچوں میں کفایت شعاری کا مظاہرہ کرچکے ہیں لیکن انھیں کوئی وکٹ نہیں مل سکا ۔ یہی وجہ ہے جس سے کے کے آر کو بہت تکلیف پہونچی ہے ۔ دوسری طرف کنگس XI ہیں جو خود بھی اس سال کی آئی پی ایل سیریز میں اچھی شروعات تو نہیں کرسکے ہیں جنھیں تاحال دو میچوں میں شکست اور صرف ایک میچ میں کامیابی حاصل ہوئی ہے ۔ ٹورنمنٹ کے افتتاحی میچ میں راجستھان رائلز کے ہاتھوں 26 رن سے شکست اُٹھانے کے بعدیہ ممبئی انڈینس کو 18 رن سے ہراتے ہوئے ٹیم کامیابی کے راستہ پر دوبارہ گامزن ہوئی ہی تھی کہ ان کی مہم کو زبردست لگا جب چہارشنبہ کو کھیلے گئے

ایک میچ میں ڈیرڈیولس کے ہاتھوں پانچ وکٹس سے شکست ہوگئی ۔ مرلی وجئے ، ویریندر سہواگ ، ڈیوڈ ملر ، وردھیمان سہا ، گلین میکس ویل اور کپتان جارج بیلی کی شکل میں کنگس XI کے پاس ایک ایسی طاقتور بیٹنگ صلاحیت موجود ہے جس میں کسی بھی جارحانہ بولنگ حملہ کے چھکے چھڑادینے کی صلاحیت ہے لیکن اس کے لئے کھیل میں یکسانیت اور متواتر طوفانی بیٹنگ کی ضرورت بھی ہے جو تاحال دیکھی نہیں جاسکی ۔ وجئے ، سہواگ، سہا ، بیلی اور ملر نے اچھی شروعات تو کی تھی لیکن انھیں اس اچھی شروعات کو بڑے اسکور میں تبدیل کرنے کی ضرورت ہے ۔ بیلی کیلئے سب سے زیادہ باعث تشویش طوفانی بیٹسمین میکسویل کا موجودہ کمزور فام ہے جن کا اب تک کا سب سے زیادہ اسکور صرف 15 رن رہا ہے ۔ کنگس الیون کی بولنگ بھی زیادہ مضبوط نہیں ہے۔مچل جانسن ، سندیپ شرما ، انوریت سنگھ اور رشی دھون کئی نازک مرحلوں پر رن دے چکے ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT