Thursday , January 17 2019

پنسارے کیس کی عاجلانہ تحقیقات کرنے کی ہدایت

بمبئی ہائی کورٹ کا سی بی آئی اور سی آئی ڈی کو این آئی اے سے مدد لینے کا مشورہ
ممبئی۔15 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) حکومت مہاراشٹرا کی سی آئی ڈی کو آج بمبئی ہائی کورٹ نے ہدایت دی کہ مزید ملزمین کی شناخت کی جائے جنہوں نے بائیں بازو کے قائد گوند پنسارے کے قتل میں ملوث تھے لیکن تاحال ان میں سے کسی کو بھی گرفتار نہیں کیا جاسکا۔ ہائی کورٹ نے سی آئی ڈی اور سی بی آئی سے کہا کہ بنسارے کی ہلاکت کی تحقیقات معقولیت پسند نریندر ڈابھولکر کے قتل کی تحقیقات جو عاجلانہ بنیادوں پر ہونی چاہئے کیوں کہ اگر ایسے جرائم کے مرتکبین کو سزاء نہ دی جاسکے تو دیگر مجرموں کے حوصلے بلند ہوجائیں گے۔ ریاستی سی آئی ڈی کی پیروی کرتے ہوئے قانون داں اشوک مندرگی کہا کہ پیشرفت کی رپورٹ پنسارے مقدمہ کی؎میں سی آئی ڈی کی جانب سے ایک سربمہر لفافلہ میں ہائی کورٹ پیش کی جاچکی ہے۔ انہوں نے کہا کہ بعض نئے افراد کی بحیثیت ملزمین شناخت کی گئی ہے۔ تحقیقات کرنے والے عہدیداروں کو ان کا پتہ چلانے میں دقت محسوس ہورہی ہے کیوں کہ ان میں سے بعض نے اپنی رہائش گاہیں اور فون نمبرس تبدیل کردیئے ہیں اور ان میں سے بیشتر نئی شناخت کے تحت زندگی گزاررہے ہیں۔ سی بی آئی نے بھی ہائی کورٹ سے کہا کہ بیشتر ملزم افراد ڈبھولکر مقدمہ میں اپنے روابط کے پتے، ٹیلی فون نمبر تبدیل کرچکے ہیں اور غیر قانونی طور پر نئے موبائل نمبر حاصل کرچکے ہیں۔ سی بی آئی کے وکیل ایڈیشنل سالیسیٹر جنرل انیل سنگھ نے ہائی کورٹ سے کہا کہ تحقیقاتی محکمہ کوشش کررہا ہے کہ ان کی ٹیلی فون پر بات چیت ٹیاپ کی جاسکے تاکہ ان کے پتے کا سراغ مل سکے۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT