Thursday , December 13 2018

پولیس انکاونٹر کی برسر خدمت جج کے ذریعہ تحقیقات کا مطالبہ

حیدرآباد۔8اپریل(سیاست نیوز)کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا تلنگانہ ریاست نے آلیر پولیس انکاونٹر کو فرضی قراردیتے ہوئے مذکورہ انکاونٹر کی برسرخدمت جج سے تحقیقات کا مطالبہ کیا۔ آج یہاں پارٹی ہیڈکوارٹر مخدوم بھون میںمنعقدہ ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے سینئر کمیونسٹ قائدین ڈاکٹر کے نارائنہ‘ سید عزیز پاشاہ اور سی پی آئی اسٹیٹ جنرل

حیدرآباد۔8اپریل(سیاست نیوز)کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا تلنگانہ ریاست نے آلیر پولیس انکاونٹر کو فرضی قراردیتے ہوئے مذکورہ انکاونٹر کی برسرخدمت جج سے تحقیقات کا مطالبہ کیا۔ آج یہاں پارٹی ہیڈکوارٹر مخدوم بھون میںمنعقدہ ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے سینئر کمیونسٹ قائدین ڈاکٹر کے نارائنہ‘ سید عزیز پاشاہ اور سی پی آئی اسٹیٹ جنرل سکریٹری تلنگانہ ریاست مسٹر چاڈا وینکٹ ریڈی نے مشترکہ طور پرانکاونٹر کوفرضی قرار دیا اور برسرخدمت جج سے مذکورہ واقع کی تحقیقات کا حکومت تلنگانہ سے پرزور مطالبہ کیا ۔ سینئر کمیونسٹ قائد جناب سیدعزیز پاشاہ نے بیس مسلح پولیس جوانوں کی موجودگی کے باوجود محروس نوجوانوں کی جانب سے پولیس پر حملے کی کہانی کو پولیس کی نااہلی کا واضح ثبوت قراردیا۔ انہوں نے مزیدکہاکہ اگر واقع مذکورہ نوجوان قصور وار ہیں تو عدالت کے ذریعہ ان کو سزاء دی جاسکتی تھی ۔ ڈاکٹر کے نارائنہ نے آلیر انکاونٹر کو کرب ناک قراردیتے ہوئے مذکورہ واقعہ کی سخت الفاظ میںمذمت کی۔ انہوں نے کہاکہ انکاونٹرکے نام پر کسی کی بھی جان لینے کا پولیس کو اختیار نہیںہے۔ مسٹر چاڈا وینکٹ ریڈی نے آلیر فرضی انکاونٹر کو تلنگانہ کی تاریخ کا سیاہ باب قراردیتے ہوئے پولیس پر منظم سازش کے تحت پانچ نوجوانوں کو موت کے گھاٹ اتاردینے کا الزام عائد کیا۔ انہو ںنے کہاکہ سی پی آئی کسی بھی قسم کی فرقہ پرستی او ردہشت گردی کی سخت مخالف ہے مگر دھشت گردی کے نام پر بے قصور نوجوانوں کی زندگی سے کھلواڑ کو سی پی آئی ہر گز برداشت نہیںکریگی۔

TOPPOPULARRECENT