Tuesday , December 11 2018

پولیس اہلکار دوران ڈیوٹی شراب نوشی نہ کریں : اعظم خان

لاء اینڈ آرڈر اور جرائم کی بڑھتی شرح پر بی جے پی کا یو پی اسمبلی سے واک آوٹ

لاء اینڈ آرڈر اور جرائم کی بڑھتی شرح پر بی جے پی کا یو پی اسمبلی سے واک آوٹ
لکھنؤ ۔ 23 جون (سیاست ڈاٹ کام) بی جے پی نے آج اترپردیش اسمبلی سے وقفہ سوالات کے دوران واک آوٹ کیا۔ پارٹی ارکان نے حکومت پر الزام عائد کیا کہ ریاست میں بڑھتے ہوئے جرائم کی شرح پر روک لگانے حکومت سنجیدہ اقدام نہیں کررہی ہے۔ بی جے پی ایم ایل ایز سریش کمار کھنہ، لکشمی کانت باجپائی اور آر ایل ڈی کے دلبیر سنگھ کی جانب سے یہ پوچھے جانے پر کہ ریاست میں بڑھتے ہوئے جرائم کی شرح کی روک تھام کیلئے حکومت کے پاس کیا کوئی مؤثر طریقہ ہے جس کا جواب دیتے ہوئے وزیر برائے پارلیمانی امور اعظم خان نے وزیراعلیٰ اکھیلیش یادو کی جانب سے جواب دیتے ہوئے ان ارکان کو جرائم پر قابو پانے کیلئے کئے جانے والے اقدامات کی تفصیل بتائی۔ مسٹر کھنہ نے کہا کہ ریاست کے پولیس اسٹیشنوں میں دیانتدارانہ اور منصفانہ انداز میں کام نہیں ہورہا ہے جبکہ لکشمی کانت باجپائی نے کہا کہ بدایوں واقعہ کے بعد بھی 86 دیگر معاملات درج کئے گئے ہیں۔ خواتین کے خلاف جرائم پر نظر رکھنے کیلئے اکھیلیش یادو نے 1099 کی ہیلپ لائن کے بارے میں بھی سوال کیا کہ آخر اس کا کیا ہوا؟ اعظم خان نے کہا کہ حکومت اس مسئلہ پر کافی حساس ہے اور جہاں تک پولیس اسٹیشنوں کی بہتر طور پر کارکردگی کا سوال ہے تو اس بات کو یقینی بنانا ہوگا کہ سب انسپکٹرس اور کانسٹیبلس ڈیوٹی پر شراب نوشی نہ کریں۔ انہوں نے نیشنل کرائم ریکارڈس بیوریو کے اعدادوشمار پیش کرتے ہوئے کہا کہ اترپردیش 25 ویں مقام پر ہے۔ انہوں نے ریاست اترپردیش میں جرائم کے ان اعداد و شمار کو بھی پیش کیا جب ریاست میں مایاوتی، راجناتھ سنگھ اور کلیان سنگھ نے بحیثیت وزیراعلیٰ خدمات انجام دیں۔

TOPPOPULARRECENT