Monday , December 18 2017
Home / ہندوستان / پولیس اہلکار کو کرسی سے باندھنے پر شہری کیخلاف مقدمہ

پولیس اہلکار کو کرسی سے باندھنے پر شہری کیخلاف مقدمہ

سری نگر ۔ 25اکتوبر (سیاست ڈاٹ کام) وسطی کشمیر کے ضلع گاندربل میں ریاستی پولیس کے ایک اہلکار کو کرسی کے ساتھ باندھنے کے الزام میں گرفتار کئے گئے ایک شہری پر پبلک سیفٹی ایکٹ (پی ایس اے )کا اطلاق کیا گیا ہے ۔ پی ایس اے کے اطلاق کے بعد محمد شفیع خان نامی اس شہری کو جموں کی کوٹ بلوال جیل منتقل کیا گیا ہے ۔ مذکورہ شہری ضلع گاندربل کے ارہامہ کا رہنے والا ہے ۔ قابل ذکر ہے کہ سماجی رابطوں کی ویب سائٹس پر گذشتہ ہفتے ایک ویڈیو نمودار ہوئی جس میں ایک خاتون ٹیچر کو ایک پولیس اہلکار کو کرسی کے ساتھ باندھتے ہوئے دیکھا گیا۔ مذکورہ ویڈیو میں کچھ شہریوں کو بھی پولیس اہلکار کو باندھنے میں خاتون کی مدد کرتے ہوئے دیکھا گیا۔ کرسی کے ساتھ باندھے گئے پولیس اہلکار پر الزام تھا کہ وہ اپنے موبائیل فون سے خاتون ٹیچر کی تصویریں لے رہا تھا۔ ایک رپورٹ کے مطابق 14 اکتوبر کو منی گام بائی پاس جب کئی افراد گاڑیوں کا انتظار کررہے تھے تو اس دوران آئی آر پی چھٹی بٹالین سے وابستہ ایک کانسٹیبل نے اپنے موبائیل سے ایک خاتون ٹیچر کی کچھ تصویریں کھینچیں۔ بتایا جارہا ہے کہ چیکنگ کے دوران پولیس کانسٹیبل کے فون سے خاتون کی تصویریں پائے جانے کے بعد مذکورہ خاتون ٹیچر اور وہاں موجود لوگوں نے اسے (پولیس کانسٹیبل) کو کرسی کے ساتھ باندھ لیا اور نعرے بازی کی۔ جہاں پولیس نے بروقت کاروائی کرتے ہوئے تصویریں کھینچنے کے مرتکب اہلکار کو معطل کردیا، وہیں اسے کرسی کے ساتھ باندھنے والوں کے خلاف بھی ایف آئی آر درج کرلی۔

TOPPOPULARRECENT