Wednesday , November 22 2017
Home / جرائم و حادثات / پولیس جھوٹے مقدمات میں ماخوذ کررہی ہے : ڈی جے ایس

پولیس جھوٹے مقدمات میں ماخوذ کررہی ہے : ڈی جے ایس

حفاظت خوداختیاری کی تربیت کسی فرقہ کیخلاف نہیں :صدر عبدالماجد

حیدرآباد۔ 14 مئی (سیاست نیوز) درس گاہ جہاد و شہادت (ڈی جے ایس) کے صدر محمد عبدالماجد نے آج پولیس پر الزام عائد کیا کہ ان کے خلاف پولیس جھوٹے اور من گھڑت واقعات میں ماخوذ کرکے ان پر مقدمات دائر کررہی ہے۔ آج یہاں مغلپورہ دفتر ڈی جے ایس پر پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ایڈوکیٹ شیخ خالد سیف اللہ جو اس تنظیم کے جنرل سیکریٹری ہیں، کہا کہ پولیس نے ان کی تنظیم کے خلاف ایسے کیسیس بھی درج کئے ہیں، جس کا ان سے دور دور تک کوئی تعلق نہیں۔ منظم طریقہ سے پولیس ان کی تنظیم اور ارکان کو جھوٹے مقدمات میں ماخوذ کرنے کی کوشش کررہی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ سعیدآباد پولیس کی جانب سے 12 مئی یعنی جمعہ کو درج کیا گیا مقدمہ بے بنیاد اور جھوٹ پر مبنی ہے۔ ڈی جے ایس کی حفاظت خود اختیاری کی تربیت جمعہ کے دن اجالے گاہ گراؤنڈ پر منعقد نہیں ہوتی۔ انہوں نے بتایا کہ ڈی جے ایس گزشتہ 34 سال سے مسلم نوجوانوں کو حفاظت خوداختیاری کی تربیت دیتی آرہی ہے، جس میں مختلف سیلف ڈیفنس کورسیس شامل ہیں۔ اس تنظیم کی جانب سے فراہم کی جانے والی تربیت کسی مذہب یا کسی فرقہ کے خلاف نہیں ہے، جبکہ آر ایس ایس کی جانب سے دی جانے والی تربیت جس میں ہتھیار اور لاٹھیوں کا بھی استعمال کیا جاتا ہے، پر پولیس خاموش تماشائی ہے۔ صدر ڈی جے ایس نے بتایا کہ ان کے خلاف سعیدآباد پولیس اسٹیشن میں درج کئے گئے مقدمہ کی تحقیقات کی جانی ضروری ہے کیونکہ وہ اس دن تربیت کیمپ میں موجود ہی نہیں تھے اور متعلقہ ڈپٹی کمشنر آف پولیس نے بی جے پی رکن اسمبلی راجہ سنگھ کے ریمارک پر کہ پرانے شہر ’’منی پاکستان‘‘ میں تبدیل ہوجائے گا، کے نتیجہ میں ایک مقدمہ درج کیا ہے اور کا توازن برقرار رکھنے کیلئے ڈی جے ایس تنظیم کو نشانہ بنایا گیا ہے۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT