Friday , October 19 2018
Home / شہر کی خبریں / پولیس کانسٹبلس کو ہیڈ کانسٹبل پر ترقی دینے کا فیصلہ موخر

پولیس کانسٹبلس کو ہیڈ کانسٹبل پر ترقی دینے کا فیصلہ موخر

حیدرآباد ۔ 17 ۔ فروری : ( سیاست نیوز) : ریاستی ڈائرکٹر جنرل آف پولیس مسٹر مہیندر ریڈی نے اپنے وعدے و تیقن کے مطابق ریاست تلنگانہ میں خدمات انجام دینے والے سینئیر پولیس کانسٹبلس کو ہیڈ کانسٹبلس ( جمعدار ) کی حیثیت سے ترقی دینے کے اقدامات کیے اور ان ہی اقدامات کے تحت سائبر آباد پولیس کمشنریٹ حدود میں خدمات انجام دینے والے جملہ 440 سینئیر پولیس کانسٹبلس کو ہیڈ کانسٹبلس کی حیثیت سے ترقی دی گئی ۔ لیکن ایک عجیب اتفاق ہے کہ جن عہدیداروں نے ترقی دی پھر وہی عہدیداروں کے ہاتھوں احکامات ترقی کو روکدینا پڑا ۔ بتایا جاتا ہے کہ عدالتی احکامات کی روشنی میں سائبر آباد پولیس کمشنریٹ حدود کے ترقی پانے والے پولیس کانسٹبلس کی خوشیوں پر پانی پھر گیا ۔ جبکہ سابقہ متحدہ اضلاع ورنگل ، عادل آباد ، نظام آباد ، محبوب نگر میں ترقی پانے والے پولیس کانسٹبلس کے لیے کوئی رکاوٹیں پیش نہیں آئیں بلکہ ہیڈ کانسٹبلس کی حیثیت سے احکامات ترقی حاصل کر کے اپنی ذمہ داری پر رجوع ہوگئے ۔ باوثوق ذرائع نے یہ بات بتائی اور کہا کہ آرمڈ ریزرو ( اے آر ) اور سیول پولیس کانسٹبلس ( پولیس اسٹیشنوں میں خدمات انجام دینے والے ) کے مابین سیناریٹی کے تنازعات پیدا ہونے اور اعتراضات کی پیشکشی میں تاخیر ہونے کی وجہ سے ہی احکامات ترقی سائبر آباد کمشنریٹ حدود میں روکدئیے گئے ۔ بتایا جاتا ہے کہ آرمڈ ریزرو پولیس کانسٹبلس جو کہ آرمڈ ریزرو زمرہ سے سیول کانسٹبلس زمرہ میں تبدیل ہوئے تھے ۔ ان کی تاریخ تقرر سے ہی سیناریٹی کو شامل کرنے کا ادعا کرتے ہوئے ان کی جملہ سرویس کو ملاتے ہوئے ترقی دینے کے لیے عدالت سے رجوع ہوئے تھے لیکن اے آر کانسٹبلس کو سیول کانسٹبلس کے ساتھ شامل کرنے پر سیول کانسٹبلس کے ساتھ نا انصافی ہونے کا اعتراض کرتے ہوئے عدالت سے رجوع ہونے کے نتیجہ میں عدالت نے جمعرات 15 فروری تک جاری کردہ احکامات ترقی کو جوں کا توں برقرار رکھتے ہوئے اس کے بعد جاری کردہ احکامات ترقی روکدینے کی ہدایت کے پیش نظر کمشنر پولیس سائبر آباد مسٹر سندیپ شنڈالیہ نے گذشتہ دن یعنی بروز جمعہ ترقی کے جاری کردہ احکامات روک دئیے ۔۔

TOPPOPULARRECENT