Saturday , January 20 2018
Home / سیاسیات / پولیس کو منظم ریاکٹ ملوث ہونے کا شبہ

پولیس کو منظم ریاکٹ ملوث ہونے کا شبہ

نئی دہلی۔10جون ( سیاست ڈاٹ کام ) دہلی پولیس اس امکان کے بارے میں تحقیقات کررہی ہے کہ کیا عام آدمی پارٹی قائد جیتندر سنگھ تومر کی جعلی ڈگری کے پس پردہ کوئی منظم ریاکٹ کام کررہا ہے ۔دہلی پولیس کمشنر بی ایس بسّی نے ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ دہلی پولیس فیض آباد پہنچ چکی ہے ۔ تحقیقاتی عہدیدار تومر کی مدد لیں گے تاکہ وہاں سے ث

نئی دہلی۔10جون ( سیاست ڈاٹ کام ) دہلی پولیس اس امکان کے بارے میں تحقیقات کررہی ہے کہ کیا عام آدمی پارٹی قائد جیتندر سنگھ تومر کی جعلی ڈگری کے پس پردہ کوئی منظم ریاکٹ کام کررہا ہے ۔دہلی پولیس کمشنر بی ایس بسّی نے ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ دہلی پولیس فیض آباد پہنچ چکی ہے ۔ تحقیقاتی عہدیدار تومر کی مدد لیں گے تاکہ وہاں سے ثبوت حاصل کئے جاسکیں اور جو کچھ بھی برسرموقع جانچ کی ضرورت ہو کی جاسکے ۔ تومر نے وزیر قانون دہلی کے عہدہ سے اپنی گرفتاری کے بعد استعفیٰ دے دیا ہے ۔ ان کا دعویٰ ہے کہ انہوں نے بی ایم ایل عود یونیورسٹی فیض آباد سے بی ایس سی کرچکے ہیں ‘ اسی لئے پولیس انہیں برسرموقع جانچ اور تفتیش کیلئے وہاں لے گئی ہے ۔ پولیس انہیں بہار کا علاقہ مونگیر بھی لے جائے گی اور وہاں بھی اسی کارروائی کا اعادہ کیا جائے گا ۔ نئی دہلی سے موصولہ اطلاع کے بموجب کانگریسی کارکن آج عام آدمی پارٹی حکومت کے خلاف صف آراء ہوگئے اور انہوں نے مطالبہ کیا کہ چیف منسٹر دہلی اروند کجریوال اپنے عہدہ سے استعفیٰ دے دیں ۔

ایک دن قبل پارٹی قائد جیتندرسنگھ تومر جو ریاستی وزیر قانون بھی تھے نے اپنی جعلی ڈگری کے الزام میں گرفتاری کے بعد اپنے عہدہ سے استعفیٰ دے دیا ہے ۔ کانگریس کے ریاستی صدر اجئے ماکن اور سینئر پارٹی قائد پی سی چاکو نے دہلی سکریٹریٹ تک جلوس نکالتے ہوئے مطالبہ کیا کہ چیف منسٹر اروند کجریوال کو مستعفی ہوجانا چاہیئے ۔ احتجاجی مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے ماکن نے کجریوال پر تنقید کرتے ہوئے الزام عائد کیا کہ چیف منسٹر دہلی اقتدار کے نشہ میں چور ہیں ۔ وزیر قانون کے پاس جعلی ڈگری تھی جس کا وکیل استغاثہ اور حکومت کے وکیل نے ادعا کیا ہے ۔ اس لئے ان کا بھی خیال ہے کہ پوری کارروائی غیرقانونی ہے ۔ صرف کجریوال کا استعفی ہی اس کارروائی کو قانونی بناسکتا ہے ۔ ممبئی سے موصولہ اطلاع کے بموجب حکومت دہلی اور مرکز کے درمیان تومر کی جعلی ڈگری کے سلسلہ میں صف آرائی کے دوران مرکزی وزیر پرکاش جاؤڈیکر نے آج چیف منسٹر کجریوال سے اخلاقی بنیادوں پر استعفی کا مطالبہ کیا اور ان سے خواہش کی کہ اپنے سابق کابینی ساتھی کی تائید کرنے پر برسرعام معذرت خواہی کریں ۔ انہوں نے کہا کہ تومر کا واقعہ شرمناک اور کھلے عام کاغذات میں ہیرپھیر کا مظاہرہ ہے۔

TOPPOPULARRECENT