Monday , February 26 2018
Home / Top Stories / کشمیر میں پاکستان کی شلباری فوجی آفیسر اور3جوان ہلاک

کشمیر میں پاکستان کی شلباری فوجی آفیسر اور3جوان ہلاک

٭ سرحد پر شدید فائرنگ کا تبادلہ جاری
٭ ہندوستانی فوج نے بھی منہ توڑ جواب دیا
جموں ۔ /4 فبروری (سیاست ڈاٹ کام)  جموں و کشمیر کے اضلاع پونچھ اور راجوری میں خطہ قبضہ سے متصل علاقوں میں پاکستان کی جانب سے شدید شلباری کی گئی ۔ اس شلباری میں ایک نوجوان فوجی کیپٹن اور دیگر تین جوان ہلاک ہوگئے ۔ اس میں کم از کم 4 افراد زخمی بتائے گئے ہیں ۔ فوجی عہدیداروں نے کہا کہ ہندوستانی فوج نے بھی پاکستان کی شلباری کا منہ توڑ جواب دیا ہے اور سرحد پر دونوں جانب ہنوز شدید فائرنگ کا تبادلہ جاری ہے ۔ سینئر فوجی عہدیداروں نے بتایا کہ پاکستانی فوج نے بلااشتعال ضلع راجوری کے سیکٹر بھیم بھر گلی میں خطہ قبضہ سے متصل علاقوں میں شدید فائرنگ شروع کردی اور اس کے ساتھ شلباری بھی کی ۔ شلباری میں تین جوان ہلاک ہوئے ۔
ایک فوجی عہدیدار جو زخمی ہوئے تھے بعد ازاں دواخانہ میں اپنے زخموں سے جانبر نہ ہوسکے ۔ 6 دن قبل ہی انہوں نے اپنی سالگرہ منائی تھی ۔ 22 سالہ کیپٹن کپیل کونڈو ہریانہ کے ضلع گرگاؤں میں موضع رانسیکا کے متوطن تھے ۔ پاکستانی شلباری میں تین جوان بھی ہلاک ہوئے جن میں 42 سالہ حوالدار روشن لال ، 27 سالہ رائفل میان رام اوتار اور 23 سالہ سبھم سنگھ بھی شامل ہیں ۔ فوجی عہدیدار نے کہا کہ ہندوستانی سپاہیوں کی شہادت رائیگاں نہیں جائے گی ۔ پاکستانی فوج کی بلااشتعال انگیز کارروائی کا ہم منہ توڑ جواب دیں گے ۔ قبل ازیں جموں و کشمیر کے ضلع پونچھ میں لائن آف کنٹرول کے قریب پاکستانی فورسیس کی طرف سے جنگ بندی کی خلاف ورزی کے نتیجہ میں ایک 15 سالہ لڑکی زخمی ہوگئی ۔ ایک مقامی پولیس عہدیدار نے کہا کہ پاکستانی فورسیس نے شاھپور سیکٹر میں لائن آف کنٹرول کے قریب واقع مختلف دیہاتوں اور سرحدی چوکیوں کو نشانہ بنایا ۔
TOPPOPULARRECENT