Friday , January 19 2018
Home / شہر کی خبریں / پون کلیان نے نئی جماعت ’ منا سینا ‘ قائم کر لی

پون کلیان نے نئی جماعت ’ منا سینا ‘ قائم کر لی

کانگریس کو اقتدار سے بیدخل کرنے کا نعرہ ۔ راہول کو وجیا نگرم سے مقابلہ کا چیلنج

کانگریس کو اقتدار سے بیدخل کرنے کا نعرہ ۔ راہول کو وجیا نگرم سے مقابلہ کا چیلنج

حیدرآباد 14 مارچ ( پی ٹی آئی ) تلگو فلم اسٹار کے کلیان کمار نے جو پون کلیان کے نام سے مشہور ہیں اپنی سیاسی جماعت قائم کردی ۔ انہوں نے مجوزہ اسمبلی اور لوک سبھا انتخابات سے عین قبل جماعت قائم کی ہے ۔ پون کلیان مرکزی وزیر کے چرنجیوی کے چھوٹے بھائی ہیں۔ انہوں نے آج شام بند کمرے کے اجلاس کے بعد اپنی جماعت ’’ جنا ۔ سینا ‘‘ کے قیام کا اعلان کیا ہے ۔ انہوں نے جذبات سے مغلوب انداز میں کہا کہ یہ عام آدمی اور ملک کی سینا ہے ۔ جنا سینا اپنے نشان کے طور پر چھ نکتے والا تارا منتخب کیا ہے جو ایک انقلاب کی علامت بھی ہے ۔ پون کلیان معروف تلگو اداکار ہیں اور انہوں نے اپنی ایک امیج بنائی ہے ۔ جب چرنجیوی نے ‘ جو خود بھی میگا اسٹار ہیں ‘ پرجا راجیم پارٹی کا 2008 میں آغاز کیا تھا پون کلیان اس کی یوتھ ونگ یوا راجیم کے سربراہ تھے اور انہوں نے پارٹی کیلئے زبردست مہم چلائی تھی ۔ انہوں نے اس وقت کانگریس کو نشانہ بنایا تھا ۔ کچھ سال بعد چرنجیوی نے اپنی جماعت کانگریس میں ضم کردی اور راجیہ سبھا کیلئے منتخب ہوئے ۔ یہ اطلاعات رہیں کہ چرنجیوی اور ان کے بھائی پون کلیان کے مابین تعلقات اچھے نہیں رہے تھے جب چرنجیوی نے اپنی پارٹی کو کانگریس میں ضم کردیا تھا ۔ پون کلیان نے اپنی سیاسی جماعت جنا سینا کے قیام کے بعد کانگریس کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا اور انہوں نے نعرہ دیا کہ وہ ملک کو بچانے کیلئے کانگریس کو اقتدار سے بیدخل کردیں۔ بی جے پی وزارت عظمی امیدوار نریندر مودی کی تقلید کرتے ہوئے انہوں نے نعرہ دیا کہ ’’ کانگریس ہٹاؤ ۔ دیش بچاؤ ‘‘ ۔ انہوں نے کہا کہ وہ کسی کانگریس لیڈر بشمول سونیا گاندھی کو بھی نہیں بخشیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ وہ اس بات کو یقینی بنائیں گے کہ کانگریس کو آئندہ پانچ سال کیلئے اقتدار حاصل نہ ہونے پائے ۔

انہوں نے سونیا گاندھی کو چیلنج کیا کہ وہ انکے فرزند راہول گاندھی کو ‘ جو امکانی وزارت عظمی امیدوار ہیں ‘ وجیا نگرم حلقہ سے مقابلہ کریں۔ انہوں نے ادعا کیا کہ ایسی صورت میں انہیں عوام کی برہمی کا سامنا کرنا پڑیگا ۔ انہوں نے مرکزی وزرا سشیل کمار شنڈے ‘ ویرپا موئیلی ‘ پی چدمبرم ‘ جئے رام رمیش اور کل ہند کاگنریس قائدین ڈگ وجئے سنگھ اور احمد پٹیل کو تنقید کا نشانہ بنایا اور کہا کہ غلط انداز سے آندھرا پردیش کو تقسیم کا نشانہ بنایا گیا ۔ انہوں نے مرکزی وزیر جئے رام رمیش کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا اور کہا کہ انہوں نے تقسیم کے مسئلہ پر مختلف بیانات دئے ہیں۔ انہوں نے رمیش سے کہا کہ میرے بھائی چرنجیوی آپ کے کابینی رفیق ہیں ان کا احترام کریں۔ یہ واضح کرتے ہوئے کہ جب ریاست تقسیم ہوگئی ہے انہوں نے حکمرانی میں استحکام کیلئے نئی جماعت تشکیل دی ہے اور کہا کہ وہ کانگریس کے سوا کسی بھی جماعت سے اتحاد کیلئے تیار ہیں۔ انہوں نے کہا کہ وہ اقتدار کیلئے سیاست میں نہیں آئے ہیں اور ہوسکتا ہے کہ وہ انتخاب بھی نہ لڑیں تاہم ملک کیلئے جان قربان کرنے سے بھی وہ گریز نہیں کرینگے۔

TOPPOPULARRECENT