Tuesday , September 25 2018
Home / کھیل کی خبریں / پُراعتمادہندوستان آججنوبی افریقہ کے سخت امتحان کیلئے تیار

پُراعتمادہندوستان آججنوبی افریقہ کے سخت امتحان کیلئے تیار

ملبورن۔21فبروری( سیاست ڈاٹ کام ) دفاعی چمپئن ہندوستانی کرکٹ ٹیم کے کھلاڑیوں کے حوصلے ٹورنمنٹ میں کٹر حریف پاکستان کو بہ آسانی شکست دینے کے بعد کافی بلند ہیں اور کل وہ یہاں ٹورنمنٹ کی ایک طاقتور ٹیم جنوبی افریقہ کے خلاف سخت امتحان کیلئے تیار ہے۔ ہندوستانی ٹیم جس نے پاکستان کے خلاف اپنے افتتاحی مقابلہ میں نہ صرف کامیابی حاصل کی ہے بلک

ملبورن۔21فبروری( سیاست ڈاٹ کام ) دفاعی چمپئن ہندوستانی کرکٹ ٹیم کے کھلاڑیوں کے حوصلے ٹورنمنٹ میں کٹر حریف پاکستان کو بہ آسانی شکست دینے کے بعد کافی بلند ہیں اور کل وہ یہاں ٹورنمنٹ کی ایک طاقتور ٹیم جنوبی افریقہ کے خلاف سخت امتحان کیلئے تیار ہے۔ ہندوستانی ٹیم جس نے پاکستان کے خلاف اپنے افتتاحی مقابلہ میں نہ صرف کامیابی حاصل کی ہے بلکہ کٹر حریف کو ورلڈ کپ میں شکست دینے کے اپنے صدفیصد ریکارڈ کو برقرار رکھا ہے لیکن دوسری جانب ہندوستانی ٹیم جس نے ورلڈ کپ میں جنوبی افریقہ کے خلاف تاحال تین مقابلے کھیلے ہیں تاہم اسے تینوں مقابلوں میں ناکامی برداشت کرنی پڑی ہے لہذا دھونی کی زیر قیادت دفاعی ٹیم حریف کو پہلی مرتبہ شکست دینے کیلئے کوشاں ہے ۔ ہندوستانی ٹیم کو 1992ء ‘ 1999ء اور 2011ء میں جنوبی افریقہ کے خلاف ناکامی برداشت کرنی پڑی تھی جیسا کہ 92ء میں پیٹر کرسٹن ‘99ء میں جیک کیلس اور 2011ء میں جیک کیلس کے ہمراہ اے بی ڈی ویلئرس نے ٹیم کی فتوحات میں اہم بیٹنگ مظاہرے کئے تھے ۔

دلچسپ حقیقت یہ بھی ہے کہ گذشتہ تینوں مقابلوں میں ہندوستان نے پہلے بیٹنگ کرتے ہوئے جنوبی افریقہ کو کامیابی کیلئے نشانہ دیا تھا جس کا حریف ٹیم نے کامیاب تعاقب کیا ہے ۔ لہذا اس مرتبہ ٹاس جیتنے پر دھونی کیا فیصلہ کرتے ہیں وہ بھی توجہ کا مرکز ہے ۔دونوں ٹیموں کیلئے یہ مقابلہ اس لئے بھی کافی اہمیت کا حامل ہے کیونکہ اس مقابلہ میں کامیابی حاصل کرنے کے ساتھ گروپ میںفاتح ٹیم نمبر ایک مقام حاصل کرسکتی ہے ۔ ملبورن کرکٹ گراؤنڈ میں کھیلے جانے والے اس مقابلہ میں اے بی ڈی ویلئرس کی زیرقیادت جنوبی افریقی ٹیم کو پسندیدہ موقف حاصل ہے کیونکہ دھونی کی ٹیم میں باصلاحیت نوجوان کھلاڑی موجود ہیںلیکن حریف کھلاڑیوں کے مقابلے ان کے مظاہرے شاندار نہیں ۔ کھلاڑی بہ نسبت کھلاڑی تقابل کیا جائے تو جنوبی افریقی ٹیم ہندوستان سے کہیں زیادہ بہتر اور شاندار ہے ۔ جنوبی افریقہ نے زمبابوے کے خلاف 62رنز کی کامیابی حاصل کی ہے جس میں جے پی ڈومینی اور ڈیوڈ ملر نے اننگز کے اختتام پر شاندار مظاہرے کئے تھے ۔ جنوبی افریقہ کے سابق کپتان گرائم اسمتھ نے اس مقابلہ کو ہندوستان کی طاقتور بیٹنگ اور جنوبی افریقہ کی طاقتور بولنگ کے درمیان ایک ٹکراؤ قرار دیا ہے ۔ ہندوستان کیلئے سب سے بڑا خطرہ حریف کپتان اے بی ڈی ویلئرس ثابت ہوسکتے ہیں

جنہوں نے حالیہ دنوں میں 32گیندوں میں سنچری اسکور کرتے ہوئے ونڈے کی تیز ترین سنچری کا ریکارڈ اپنے نام کرلیا ہے ۔ ہندوستان کیلئے 22سنچریاں اسکور کرنے والے ویراٹ کوہلی اور گذشتہ مقابلہ میں نصف سنچری اسکور کرنے والے سریش رائنا کے مظاہرے اہمیت کے حامل ہوں گے جب کہ شکھر دھون نے بھی پاکستان کے خلاف نصف سنچری اسکور کی ہے ۔ مذکورہ بیٹسمینوں کو دنیا کے تیز ترین بولر ڈیل اسٹین ‘ مورنی مورکل اور ورنان فیلنڈر کے خلاف سخت امتحان درپیش رہے گا ‘ کیونکہ ملبورن کی وکٹ پر ان بولروں کا سامنا کرنا کافی مشکل ہوتا ہے ۔ جنوبی افریقہ کے اوپنر ہاشم آملہ کا ہندوستان کے خلاف مظاہرہ ہمیشہ ہی شاندار رہا ہے اور ان کے مظاہروں میں استقلال سے ہندوستانی بولروں کو پریشانی کا سامنا پڑسکتا ہے ۔ علاوہ ازیں وکٹ کیپر بیٹسمین کوئنٹن ڈیکاک نے ہندوستان کے خلاف متواتر تین سنچریوں کا ریکارڈ بھی بنارکھا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT