پُرجوش مہم ’ 2025ء میں بہار ‘ کا آغاز، نتیش پُرعزم

پٹنہ ، 9 جون (سیاست ڈاٹ کام) ریاستی حکومت نے آج یہاں پُرجوش مہم ’ بہار 2025ء میں‘ کا آغاز کیا تاکہ پالیسی سازی میں عوامی شرکت کو یقینی بناتے ہوئے آئندہ 10 سال کیلئے ویژن دستاویز برائے ترقی پیش کیا جاسکے۔ یہ مہم جسے چیف منسٹر نتیش کمار کی ذہنی اختراع اور شہریوں کی زبردست شراکت کے ذریعے شراکتی ایجنڈے کیلئے دنیا کی سب سے بڑی مہم قرار دیا ج

پٹنہ ، 9 جون (سیاست ڈاٹ کام) ریاستی حکومت نے آج یہاں پُرجوش مہم ’ بہار 2025ء میں‘ کا آغاز کیا تاکہ پالیسی سازی میں عوامی شرکت کو یقینی بناتے ہوئے آئندہ 10 سال کیلئے ویژن دستاویز برائے ترقی پیش کیا جاسکے۔ یہ مہم جسے چیف منسٹر نتیش کمار کی ذہنی اختراع اور شہریوں کی زبردست شراکت کے ذریعے شراکتی ایجنڈے کیلئے دنیا کی سب سے بڑی مہم قرار دیا جارہا ہے، اس کا مقصد ریاست کے 40,000 دیہات میں رہنے والے چار کروڑ عوام بشمول 10,000 سرکاری اور شہری سماج کے ارکان تک آئندہ آٹھ تا دس ہفتوں میں رسائی حاصل کرنا ہے۔ ریاستی دارالحکومت میں منعقدہ ایک تقریب میں یہ مہم عوام کے نام معنون کرتے ہوئے نتیش نے کہا، ’’سارے بہار میں میرے حکمرانی سے متعلق دوروں میں مجھے یہ خیال آیا کہ ایسا کوئی میکانزم ہونا چاہئے جو عوام کی شرکت، ان کے خیالات اور ترقیاتی پالیسیوں میں ان کی رائے کو بھی شامل کرسکے۔ ’[email protected]‘ اسی کا نتیجہ ہے۔‘‘ کمار نے مزید کہا کہ یہ مہم عوام کی آراء کو آشکار کرے گی، انھیں اپنے خیالات کو پیش کرنے کی حوصلہ افزائی کرے گی، اور یہ بھی کہ وہ صحت، برقی، تعلیم، روزگار اور ترقی کے دیگر شعبوں میں کیا چاہتے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ بہار کے غیرمقیم لوگوں سے بھی رائے طلب کی جائے گی، جس کے ساتھ ساتھ مختلف شعبوں کے ماہرین سے بھی اس ضمن میں آراء معلوم کی جائیں گی۔ کمار نے ادعا کیا کہ ہر چیز باضابطہ محفوظ ہوگی اور آئندہ 10 سال کیلئے منصوبۂ عمل کے بارے میں ویژن دستاویز کی تیاری میں شامل کی جائے گی۔ یوں تو ویژن دستاویزات پہلے بھی بنائے گئے، لیکن یہ پہلی مرتبہ ہے کہ عوامی شراکت کو شامل کیا جارہا ہے۔ انھوں نے تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ یہ حکومتی پہل ہے جس میں کئی تنظیمیں اپنا حصہ ادا کریں گی۔ ہمارا مقصد بہتر تال میل والے ویژن دستاویز کیلئے ’جن سموَد‘ (عوامی تبادلہ خیال) قائم کرنا ہے۔ ’’میں اس تعلق سے کافی پُرجوش ہوں کیونکہ یہ ویژن دستاویز ترقیاتی پروگراموں کی ترتیب میں معاون ہوگا۔‘‘

این سی پی کا بہار چناؤ میں محدود مقابلہ
پٹنہ، 9 جون (سیاست ڈاٹ کام)صدر این سی پی شردپوار نے آج اعتماد ظاہر کیا کہ بہار میں جنتادل ( یو ) ۔ آر جے ڈی زیرقیادت اتحاد اچھے متبادل کے طورپر اُبھرے گا اور اُن کی پارٹی محدود تعداد میں نشستوں پر مقابلے کیلئے کوشاں ہیں۔ این سی پی کے دو روزہ نیشنل ایکزیکٹیو سے قبل پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے پوار نے کہاکہ این سی پی اس اتحاد میں محدود تعداد میں نشستوں پر نظر رکھے ہوئے ہے ۔ پارٹی کا کنونشن آج شام یہاں شروع ہورہا ہے ۔ انھوں نے بتایا کہ ہم نے واجبی حکمت عملی اختیار کی ہے ۔ ہمارا ماننا ہے کہ بہار کی عوام آنے والے اسمبلی کے چناؤ میں اپنے فیصلے کے ذریعہ قومی سیاست کی دھارا بدل دیں گی ۔ انھوں نے کہا کہ این سی پی نے بہار میں ایک لوک سبھا نشست جیتی اور اُن کی پارٹی کو اُسی تناسب میں اسمبلی نشستوں کی توقع ہے ۔ این سی پی جنرل سکریٹری طارق انور نے گزشتہ عام انتخابات میں بہار سے کاٹیہار نشست جیتی تھی ۔ پوار نے کہاکہ تمام کوششیں یہ یقینی بنانے پر مرکوز ہیں کہ ووٹوں کی تقسیم نہ ہونے پائے اور اتحاد میں دیگر پارٹیوں کی طاقت کو بھی ملحوظ رکھا جائے ۔ یہ پوچھنے پر کہ این سی پی بہار چناؤ کے سیکولر اتحاد میں کتنی نشستوں کی توقع کررہی ہے ، پوار نے کہاکہ طارق انور کو اس ضمن میں دیگر اتحادی شراکت داروں کے قائدین کے ساتھ مشاورت میں فیصلہ کا مجاز گردانا گیا ہے ۔ پوار نے کہاکہ وہ چیف منسٹر بہار نتیش کمار سے یہاں اپنے دو روزہ قیام کے دوران ملاقات کی توقع رکھتے ہیں ۔ انھوں نے کہاکہ قانون ساز کونسل کے چناؤ میں جو 7 جولائی کو مقرر ہیں این سی پی ایک نشست پر انتخاب لڑ رہی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT