Sunday , July 22 2018
Home / Top Stories / پٹرول، ڈیزل کی قیمتوں میں اضافہ،تلنگانہ حکومت خوش!

پٹرول، ڈیزل کی قیمتوں میں اضافہ،تلنگانہ حکومت خوش!

عوام کا بُرا حال
عوام کی جیب خالی ہونے کی فکر نہیں، سرکاری خزانہ بھرنے پر مسرت سے سرشار

حیدرآباد ۔ 4 ۔ اپریل : ( سیاست نیوز ) : پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں بے تحاشہ اضافہ سے تلنگانہ حکومت خوش ہے کیوں کہ حکومت کو 1000 کروڑ روپئے کی آمدنی ہوئی ۔ حالیہ 17 دن میں 14 مرتبہ پٹرول و ڈیزل کی قیمتوں سے اضافہ سے مزید 100 کروڑ کا فائدہ ہوا ۔ عوامی مفادات کے تحفظ کے لیے پٹرول اور ڈیزل کو بھی جی ایس ٹی کے دائرے کار میں شامل کرنا ضروری ہوگیا ۔ تاہم حکومت تلنگانہ کے بشمول دوسرے ریاستیں اس کی سخت مخالفت کررہے ہیں ۔ پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں ہر دن اضافہ ہورہا ہے ۔ گذشتہ 4 سال میں پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں ریکارڈ اضافہ ہوا ہے ۔ جس سے عوام میں ناراضگی پائی جاتی ہے اور گاڑی چلانے والوں کو پٹرول پمپ پہونچنے میں ڈر لگ رہا ہے ۔ دوسری جماعت پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں بتدریج اضافہ سے حکومت تلنگانہ جشن منا رہی ہے ۔ عوام کی جیب خالی ہونے کی حکومت کو فکر نہیں ہے ۔ سرکاری خزانہ بھرنے پر وہ مسرت سے سرشار ہے ۔ پٹرول اور ڈیزل سے حکومت کو ویاٹ کی شکل میں سالانہ ایک ہزار کروڑ روپئے کی آمدنی ہورہی ہے ۔ حالیہ دنوں میں قیمتوں میں اضافہ پر مزید 100 کروڑ روپئے کی آمدنی ہوئی ہے ۔ ابھی تک اسٹامپس اور رجسٹریشن ، اکسائز ، ٹرانسپورٹ سے جو آمدنی کا نشانہ مختص کیا گیا تھا اس کو عبور کرلیا گیا ۔ جس کے نتیجے میں حکومت تلنگانہ مطمئن ہے ۔ اس کے علاوہ پٹرول و ڈیزل سے حکومت کو توقع سے زیادہ آمدنی ہورہی ہے ۔ ملک بھر میں مختلف اشیاء کو جی ایس ٹی میں شامل کیا گیا ہے تاہم پٹرول اور ڈیزل کو جی ایس ٹی کے دائرے کار سے باہر رکھتے ہوئے پٹرول اور ڈیزل کے ساتھ شراب پر ویاٹ نافذ کرنے کے اختیارات ریاستوں کو سونپ دئیے گئے ہیں ۔ جس کی وجہ سے فی لیٹر پٹرول پر 35.2 اور ڈیزل پر فی لیٹر 27 روپئے کا حکومت کو فائدہ ہورہا ہے جس سے تلنگانہ حکومت کو سالانہ 1000 کروڑ روپئے کی آمدنی ہورہی ہے ۔ روزانہ پٹرول اور ڈیزل پر 10 پیسے سے ایک روپئے تک اضافہ ہورہا ہے ۔ اسی حساب سے ویاٹ کی آمدنی میں بھی اضافہ ہورہا ہے ۔ تین دن قبل 68 روپئے فی لیٹر فروخت ہونے والا ڈیزل اب 70 روپئے فی لیٹر دستیاب ہورہا ہے ۔ اسی طرح فی لیٹر پٹرول کی قیمت 76 روپئے سے بڑھ کر 78.50 روپئے ہوگئی ہے ۔ پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں زبردست اضافہ پر مرکزی وزیر پٹرولیم دھرمندرا پردھان نے بھی ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ مرکزی حکومت نے اکسائیز ڈیوٹی میں کچھ حد تک کمی لائی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT