Tuesday , September 25 2018
Home / Top Stories / پٹرول اور ڈیزل کی قیمت میں بھاری اضافہ

پٹرول اور ڈیزل کی قیمت میں بھاری اضافہ

اکسائیز ڈیوٹی میں کمی کیلئے وزارت تیل کی وزارت فینانس سے درخواست
نئی دہلی ۔ 23جنوری۔( سیاست ڈاٹ کام ) 2014 ء میں بی جے پی حکومت کے برسراقتدار آنے کے بعد پٹرول کی قیمت میں بھاری اضافہ کے ساتھ اعلیٰ ترین سطح پر پہونچ گئی اور ڈیزل کی فی لیٹر قیمت 63.20 روپئے کے ساتھ ریکارڈ بلندی پر پہونچ گئی جس کے نتیجہ میں وزارت تیل کو اکسائیزڈیوٹی میں کمی کی درخواست کیلئے مجبور ہونا پڑا ہے ۔ تیل کی سرکاری کمپنیوں کی طرف سے ایندھن کی قیمتوں کے بارے میں روزانہ جاری کی جانے والی فہرست کے مطابق دہلی میں فی لیٹر پٹرول کی قیمت 72.38 تک پہونچ گئی جو مارچ 2014 ء سے اب تک کی سب سے زیادہ قیمت ہے ۔ ممبئی میں وسط ڈسمبر سے تاحال پٹرول کی قیمت میں 3.31 روپئے فی لیٹر کا اضافہ ہوا ہے جس کے ساتھ ہی پٹرول کی قیمت 80 روپئے سے بڑھ گئی جو ملک بھر میں سب سے زیادہ ہے ۔ ممبئی میں ڈیزل 67.30 روپئے فی لیٹر فروخت کیاجارہا ہے جہاں مقامی سیلس ٹیکس اور ریاست کی شرحیں زیادہ ہیں۔ وسط ڈسمبر سے ڈیزل کی قیمتوں میں 4.86 روپئے فی لیٹر سے زائد اضافہ ہوا ہے۔ بین الاقوامی مارکٹ میں تیل کی قیمتوں میں ہونے والے اضافہ کے نتیجہ میں ملک میں ایندھن کی قیمتیں بڑھی ہیں جس کے پیش نظر وزارت تیل نے وزارت فینانس سے درخواست کی ہے کہ پارلیمنٹ میں آئندہ ہفتہ پیش کئے جانے والے مرکزی بجٹ میں تیل پر عائد اکسائیز ڈیوٹی میں کمی کی جائے۔ اکسائیز ڈیوٹی میں تخفیف کی درخواست وزارت تیل کی طرف سے وزیر فینانس کو غور وخوض کیلئے پیش کئے جانے والے ماقبل بجٹ میمورنڈم کا ایک حصہ ہے ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT