پٹرول و ڈیزل قیمتوں میں خاموش اضافہ

شہر میں پٹرول 75 روپئے اور ڈیزل 67 روپئے فی لیٹر سے متجاوز
حیدرآباد 16 جنوری (سیاست نیوز) ملک گیر سطح پر پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں مسلسل اضافہ کے نتیجہ میں گزشتہ کے مقابلہ شہر حیدرآباد میں پٹرول اور ڈیزل کی قیمتیں اضافہ کے ذریعہ ریکارڈ سطح تک پہونچ گئی ہیں جس کی سابق میں کوئی نظیر نہیں ملے گی۔ حیدرآباد میں پٹرول کی قیمت فی لیٹر 75 روپئے سے تجاوز کرگئی ہے جبکہ ڈیزل کی قیمت 67 روپئے سے تجاوز کرگئی ہے۔ پٹرول ڈیزل کی قیمتوں کا تعین کرنا پٹرولیم اداروں کے ہاتھ میں چلے جانے کے بعد پٹرول اور ڈیزل کی قیمتیں کب کتنی اور کس طرح ہوسکتی ہیں اس تعلق سے صورتحال غیر یقینی ہوچکی ہے۔ روزانہ پٹرول، ڈیزل کی قیمتوں کا تعین کرنے مرکزی حکومت کے گرین سگنل کی وجہ سے ایک دن 5 پیسے قیمت میں کمی ہونے کے بعد دوسرے دن 30 پیسے اضافہ ہو رہا ہے ۔ اس طرح کی صورتحال سے شہر میں ایک لیٹر پٹرول کی قیمت 73 روپئے رہنے پر بھی کم دنوں میں 75 روپئے سے زائد قیمت ہوگئی ہے۔ علاوہ ازیں ڈیزل کی قیمت میں بھی غیر معمولی اضافہ کے ذریعہ اب فی لیٹر ڈیزل کی قیمت 67.22 روپئے تک پہونچ گئی۔ بتایا جاتا ہے کہ روزانہ پٹرول و ڈیزل کی قیمتوں کو مقرر کرنے کے طریقہ کار کا آغاز ہونے کے بعد شہر میں پہلی مرتبہ فی لیٹر پٹرول کی قیمت 75 روپئے سے زائد ہوئی ہے۔ جبکہ ایک موقع پر ملک کی تاریخ میں فی لیٹر پٹرول کی قیمت 80 روپئے تک پہونچ گئی تھی۔ 2013 میں پٹرول کی قیمت اضافہ کے ذریعہ فی لیٹر پٹرول کی قیمت 80.58 روپئے ہوگئی تھی لیکن اس غیرمعمولی اضافہ کے خلاف احتجاج کے نتیجہ میں اندرون دو یوم میں اس وقت کی مرکزی حکومت کو پٹرول کی اضافہ شدہ قیمت میں کمی کرنے پر مجبور ہونا پڑا تھا۔

TOPPOPULARRECENT