Thursday , July 19 2018
Home / ہندوستان / پٹرول پمپس پر دھوکہ دہی ‘ پتہ چلانے کا طریقہ

پٹرول پمپس پر دھوکہ دہی ‘ پتہ چلانے کا طریقہ

نئی دہلی ۔ 8جولائی ( سیاست ڈاٹ کام ) پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میںحال ہی میں اضافہ سے صارفین پریشان ہیں ۔ اس کے باوجود پٹرول پمپس پر صارفین کے ساتھ دھوکہ دہی اعلانیہ جاری ہے ۔ حکومت حیرت زدہ ہے کہ اس کے بارے میں کیا کیا جائے لیکن اس پر قابو پانے کیلئے متعلقہ پٹرول پمپس پر دھوکہ دہی کی جانچ کے چند آسان طریقے ہے جن پر صارفین عمل کر کے دھوکہ دہی سے بچ سکتے ہیں ۔ پٹرول بھرتے وقت دھوکہ دہی کے بارے میں شبہ ہوتا ہی اس بات کو یقینی بنایا جائے کہ پٹرول ڈالنے سے پہلے میٹر صفر دکھائے ۔ بعض پٹرول پمپس پر کم پٹرول جس کی مقدار فی گاڑی 100تا 150ملی لیٹر ہوتی ہے ڈالا جاتا ہے ۔ اس کے علاوہ مشین اور پٹرول ڈالنے والے نازل کے ساتھ چھیڑ چھاڑ کی جاتی ہے جس کا پہچاننا مشکل ہوتاہے اس لئے بیشتر صارفین اس دھوکہ دہی کا شکار ہوجاتے ہیں ۔ اس لئے اس عام سی چال کو جان لینا بہتر ہے ۔ جب آپ 500یا 1000روپئے کا پٹرول ڈلوارہے ہیں تو اس بات کو یقینی بنائیں کہ پٹرول ڈالنے والا نازل کو جھٹکے نہ دیں ۔ اگر وہ ایسا کرے تو آپ اسے فوری روک سکتے ہیں ۔ پانچ لیٹر کا پٹرول کیان ہمیشہ اپنے ساتھ رکھیں اور پٹرول ڈالنے والے سے کہیں کہ وہ آپ کے ڈبے میں پانچ لیٹر پٹرول ڈالے ۔ اگر مقدار کم ہوں تو آسانی سے اس کا پتہ چلایا جاسکتا ہے ۔ اگر آپ کو پٹرول کے معیار کے بارے میں شبہ ہو تو پٹرول پمپ والے سے رسید طلب کریں اور صارفین تحفظ قانون کے تحت پٹرول پمپ صارفین کو فلٹر پیپر فراہم کرنے کا پابند ہے ۔ چند قطرے پٹرول کاغذ پر ڈال کر دیکھیں ‘ اگر پٹرول خالص ہے تو یہ بخارات بن کر فضاء میں اُڑ جائے گا اورکاغذ پر کوئی نشان نہیں چھوڑے گا ۔ اگر پٹرول میںملاوٹ ہے تو کاغذ پر دھبہ آجاتا ہے ۔ اس طرح آپ ملاوٹ والے پٹرول کی آسانی سے جانچ کرسکتے ہیں اور پٹرول پمپ کے ارباب سے اس کی شکایت کرسکتے ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT