Tuesday , December 12 2017
Home / Top Stories / پٹھان کوٹ حملہ کی حقیقت معلوم کرنے نواز شریف کو مشورہ

پٹھان کوٹ حملہ کی حقیقت معلوم کرنے نواز شریف کو مشورہ

پاکستان پرانے بہانے نہ دہرائے ‘وزیر خارجہ امریکہ جان کیری کی وزیراعظم پاکستان نواز شریف سے ٹیلیفون پر بات چیت

اسلام آباد۔10جنوری ( سیاست ڈاٹ کام ) وزیر خارجہ امریکہ جان کیری نے وزیراعظم پاکستان نواز شریف سے کہا کہ پاکستان کو ’’ تیزی سے پٹھان کوٹ حملہ کی تحقیقات کرنی چاہیئے ‘‘ اور ’’ جلد ہی سچائی کا پتہ چلانا چاہیئے ۔ وزیر خارجہ امریکہ جان کیری نے ٹیلیفون پر وزیراعظم پاکستان نواز شریف سے بات چیت کرتے ہوئے انہیں یہ پیغام دیا ۔ جان کیری نے وزیراعظم کو پٹھان کوٹ دہشت گرد حملہ کی سچائی معلوم کرنے میں بھرپور تعاون کا تیقن دیا ۔ یہ بیان وزیراعظم پاکستان کے دفتر سے جاری کیا گیا ہے ۔ بیان کے بموجب شریف نے وزیر خارجہ امریکہ جان کیری سے کہہ دیا کہ ’ ہم تیز رفتار سے اور صاف و شفاف انداز میں تحقیقات کررہے ہیں اور سچائی کا پتہ چلائیں گے ‘ ۔ دنیا اس سلسلہ میں ہمارے خلوص اور تاثیر کا مشاہدہ کرے گی ۔ بیان کے بموجب جان کیری نے نواز شریف کو ہندوستانی سراغ رسانی اطلاعات کے بعد ٹیلیفون کیا تھا ۔

اطلاعات کے بموجب پاکستان میں لوگوں اور گروپس نے یہ سازش تیار کی تھی اور پٹھان کوٹ کے فضائیہ کے اڈہ پر حملہ کرنے کی کارروائی کی تھی ۔ جان کیری نے کہا کہ امریکہ کو اُمید ہے کہ ہندوستان اور پاکستان کے درمیان اس حقیقت کے باوجود کہ دہشت گردوں نے امن بات چیت کے احیاء کو ناکام بنانے کی ہر ممکن کوشش کی ہے ۔ یہ بات چیت جاری رہے گی ۔ انہوں نے کہا کہ ہند۔ پاک بات چیت علاقائی استحکام اور قیادت کیلئے انتہائی اہم ہے ۔ دونوں ممالک کے وزرائے اعظم کو چاہیئے کہ اس بات کو یقینی بنائیں کہ بات چیت مسلسل جاری رہتی ہے ۔ نواز شریف نے کہا کہ پاکستان کسی کو بھی پاکستان کی سرزمین بیرون ملک دہشت گرد کارروائیوں کیلئے استعمال کرنے کی اجازت نہیں دے گا ۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ جان کیری نے وزیراعظم کی قیادت کے ایسے مشکل ماحول میں کارکردگی کی ستائش کی ۔ انہوں نے کہا کہ ایسی صورتحال میں بالکل اسی قسم کی قیادت ضروری تھی ۔ قبل ازیں امریکہ کے دفتر خارجہ کے ایک سینئر عہدیدار نے واشنگٹن میں کہا کہ امریکہ کا احساس ہے کہ اب وقت آگیا ہے کہ پاکستان اپنے تیقنات کو عملی جامہ پہنائے ۔ اگر وہ دونوں ممالک کے سرکاری اور خانگی کنونشنس کی پابندی کرتا ہے تو اُسے چاہیئے کہ دہشت گرد نٹ ورکس کے خلاف کارروائی میں کوئی تعصب نہ برتیں اور پٹھان کوٹ حملہ کے خاطیوں کو انصاف کے کٹھہرے میں کھڑا کریں ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کو وہی پرانے بہانے اختیار نہیں کرنے چاہیئے جس کے ذریعہ اُس نے 26 نومبر 2008ء کو ممبئی حملوں کی پردہ پوشی کی تھی ۔

TOPPOPULARRECENT