Wednesday , September 26 2018
Home / شہر کی خبریں / پڑھائی کے دوران ذہنی تناؤ سے بچنے ورزش اور ہلکی غذاؤں کے استعمال کا مشورہ

پڑھائی کے دوران ذہنی تناؤ سے بچنے ورزش اور ہلکی غذاؤں کے استعمال کا مشورہ

جلد سونے اورعلی الصبح بیداری سے یادداشت میں اضافہ ہوگا، سائنسدانوں کی تحقیق

حیدرآباد 4 مارچ (سیاست نیوز) آج کے مسابقتی دور میں طلبہ اپنے سنہرے مستقبل کے لئے اعلیٰ نمبرات سے کامیابی کے نشانے کی تکمیل کی چکر میں دن رات کھانے، پانی اور نیند کا خیال کئے بغیر ذہنی و جسمانی تناؤ میں مبتلا ہورہے ہیں۔ این آئی اے کے سائنس دانوں کے مطابق کم عمر نوجوان طلبہ کو وقت پر غدا کا استعمال اور روزانہ 30 یا 40 منٹ جسمانی ورزش کھیل کود وغیرہ کے ذریعہ صحت کو برقرار رکھتے ہوئے امتحانات کی تیاری کرنی چاہئے جس کی وجہ سے طلبہ میں جسمانی و ذہنی تناؤ ختم ہوتا ہے اور امتحان کی تیاری میں آسانی پیدا ہوتی ہے اور طلبہ رات کے کھانے میں نرم اور ہلکی غذاؤں کا استعمال کریں تو بہتر ہوگا اور رات 10 بجے تک امتحان کی تیاری کرکے سونے سے قبل ایک گلاس دودھ کا استعمال کریں اور صبح جلد بیدار ہوکر امتحان کی تیاری کریں۔ ڈاکٹرس کا کہنا ہے کہ اگر طلبہ ان اُصول پر عمل کرتے ہوئے امتحانات کی تیاری کریں تو بہتر نمبرات سے کامیابی حاصل کرسکتے ہیں اور دوپہر کے کھانے میں طاقتور غذائیں جیسے چاول، گیہوں کی روٹی، آئرن، کاربوہائیڈریڈ والی غذا جیسے پالک کی بھاجی اور ہری ترکاریاں وغیرہ کا استعمال کریں اور ساتھ میں دہی، چھاچھ کا استعمال کرنا ہرگز نہ بھولیں۔ واضح ہو کہ بہ آسانی ہضم ہونے والی غذاؤں کا استعمال کرنا چاہئے اور صبح کے ناشتہ میں وٹامن ’بی‘ کثرت سے پائی جانے والی غذاؤں کا استعمال کریں کیونکہ وٹامن بی کی کثرت سے ذہنی قوت میں اضافہ ہوتا ہے اور وٹامن بی والی غذائیں جیسے اڈلی، اپما، گیہوں سے تیار کردہ غذائیں، براؤن برڈ، جوار کی روٹی کا استعمال بہتر ہوگا۔ فروٹ جیسے سیب، نارنگی، گاجر، انار، بادام، پستہ وغیرہ کا استعمال کرنا چاہئے اور ان غذاؤں کا استعمال کرنے کے لئے قوی غذاؤں کے تحقیقی ادارے نے طلبہ کو مشورہ دیا ہے اور اس ادارے کی تحقیقات سے واضح ہوا ہے کہ جو طلبہ ایسی غذاؤں کا استعمال کرتے ہوئے تعلیم میں مصروف ہوتے ہیں وہ ان طلباء سے بہتر نتائج لارہے ہیں۔ جو ایسی غذاؤں کا استعمال نہیں کرتے اور تحقیق سے یہ بھی واضح ہوا ہے کہ روزانہ استعمال کی جانے والی غذا کے مقابلہ 10% زیادہ غذا کے استعمال کی امتحانات کے دور میں ضرورت ہے کیوں کہ امتحانات کے آغاز کے ساتھ ہی موسم گرما کا آغاز بھی ہوتا ہے اس لئے گرمی کی لو سے بچنے کے لئے ناریل کا پانی، الیکٹرال پاؤڈر کا پانی، چھاچھ وغیرہ کا استعمال کرنے کا این آئی این ۔ تارناکہ کے سائنس داں و ڈپٹی ڈائرکٹر ڈاکٹر ایم سبا راؤ نے مشورہ دیا کہ نیوٹریشن سائنس داں و اسسٹنٹ ڈائرکٹر این آئی این ڈاکٹر دماینتی نے بتایا کہ طلبہ نیند نہ آنے کے لئے اکثر چائے کافی وغیرہ کا استعمال کرتے ہیں جو صحت کے لئے مضر ہے۔ طلبہ کو چاہئے کہ صحت کو برقرار رکھنے کے لئے کم از کم سات گھنٹے ضرور سویا کریں۔ ڈاکٹر بی جانکی نے مشورہ دیا کہ طلبہ جنک فوڈس اور گھر سے باہر کی غذائیں ہرگز استعمال نہ کریں اور امتحانات کے دور میں گوشت کے استعمال سے بھی پرہیز کریں۔ آیوروید ڈاکٹر پردیپ نے مشورہ دیا ہے کہ طلبہ امتحان کے دور میں سیل فونس، انٹرنیٹ، ٹی وی وغیرہ سے دوری اختیار کریں اور طلبہ ساری رات جاگتے ہوئے امتحان کی تیاری کرکے کچھ بھی حاصل نہیں کرپائیں گے بلکہ رات میں جلد سو کر سویرے جلد بیدار ہوکر امتحان کی تیاری کریں۔

TOPPOPULARRECENT