Wednesday , September 26 2018
Home / Top Stories / !پکوان گیاس کی سبسیڈی میں دھاندلیاں ، آپ کی رقم دوسرے کے کھاتے میں 

!پکوان گیاس کی سبسیڈی میں دھاندلیاں ، آپ کی رقم دوسرے کے کھاتے میں 

موبائل فون نمبرات کے غلط استعمال کے ذریعہ سبسیڈی کی رقم کا سرقہ ، چوکسی ضروری
حیدرآباد۔6مارچ(سیاست نیوز) پکوان گیاس نہ ہونے کے باوجودسبسیڈی کی رقم کے متعلق ایس ایم ایس موصول ہو رہا ہو تو سمجھ جائیے کہ حکومت آپ کے نام اور نمبر پر سبسیڈی تو جاری کر رہی ہے لیکن یہ آپ تک نہیں پہنچ رہی ہے بلکہ کوئی اور آپ کے موبائیل نمبر کا غلط استعمال کرتے ہوئے گیاس سبسیڈی کی رقم کا حکومت سے سرقہ کر رہا ہے ۔حکومت کی جانب سے فراہم کی جانے والی پکوان گیاس سبسیڈی جو کہ صارفین کے بینک کھاتہ میں جمع ہوتی ہے اس کی اطلاع غیر متعلقہ فون نمبرات تک پہنچ رہی ہیں اور جن لوگوں کا گیاس کنکشن نہیں ہے ان کے فون نمبر پرپکوان گیاس سبسیڈی کی رقم جمع ہونے کی اطلاعات نے موبائیل صارفین کو پریشانی میں مبتلاء کر رکھا ہے جن کے نام پر پکوان گیاس ہے ہی نہیں۔ موبائیل نمبر پر سبسیڈی کی رقم جمع کرنے کی اطلاع اور غیر متعلقہ اکاؤنٹ نمبر سے موبائیل صارفین میں تشویش کی لہر پائی جاتی ہے کیونکہ لوگوں میں یہ گمان پیدا ہونے لگا ہے کہ بینک اور گیاس ایجنسی کی جانب سے ان کے فون نمبرات کا غلط استعمال کیا جانے لگا ہے اور ان فون نمبرات کے استعمال کے ذریعہ کوئی بڑی دھاندلی کا سلسلہ جاری ہے۔ گیاس ایجنسی مالکین کا کہناہے کہ انہیں فراہم کردہ موبائیل فون نمبر اور ان کے صارفین کی فہرست کے اعتبار سے ان کے کھاتوں میں سبسیڈی کی رقم پہنچائی جاتی ہے اور جب پکوان گیاس بک کروائی جاتی ہے اس وقت بھی صارفین کو ایس ایم ایس کے ذریعہ مطلع کیا جاتا ہے اور جب سبسیڈی کی رقم جاری کی جاتی ہے اس کی اطلاع بھی صارفین کے موبائیل نمبر پر روانہ کردی جاتی ہے اور بینک کے ذریعہ بھی صارف کو کھاتہ میں رقم کے پہنچنے کی اطلاع دیدی جاتی ہے۔ شہریوں میں یہ شکایات عام ہوتی جا رہی ہیں کہ انہیں صرف سبسیڈی کی رقم کی وصولی کی اطلاع بذریعہ ایس ایم ایس موصول ہو رہی ہے اور اس ایس ایم ایس میں جو تفصیلات جیسے بینک کھاتہ کے آخری 4 ہندسہ ہوتے ہیں وہ ان کے کھاتہ سے تعلق نہیں رکھتے بلکہ چند معاملات میں تو جن بینکوں کے نام موصول ہو رہے ہیں ان بینکوں میں صارفین کے کھاتے بھی نہیں ہیں۔بینک عہدیداروں کا کہنا ہے کہ جو موبائیل نمبر ان کے ریکارڈ میں درج ہے ان موبائیل نمبرات کے علاوہ کسی اور کو بینک کے ذریعہ ایس ایم ایس روانہ کئے جانے کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا بلکہ بینک میں کھاتہ رکھتے ہوئے بینک کے اصولوں کے مطابق موبائیل نمبر درج کروائے جانے کے بعد ہی ایس ایم ایس خدمات شروع کی جاتی ہیں ۔ بینک عہدیدار اس بات کا اعتراف کر رہے ہیں کہ بعض لوگ ان سے ان شکایات کے ساتھ رجوع ہو رہے ہیں لیکن ان کی ان شکایات کا ازالہ کرنے کے لئے بینک کی جانب سے کھاتہ کی مکمل جانچ کرنی پڑ تی ہے۔ عہدیداروں کا کہناہے کہ گیاس کنکشن ‘ بینک کھاتہ اور موبائیل نمبر کو آدھار سے مربوط کئے جانے کے بعد یہ شکایات باقی رہنے کی گنجائش نہیں ہوگی ۔

TOPPOPULARRECENT