Monday , December 11 2017
Home / شہر کی خبریں / پکوان گیاس کی سربراہی میں ڈیلرس کی لاپرواہی

پکوان گیاس کی سربراہی میں ڈیلرس کی لاپرواہی

گیاس فلنگ کمپنی میں حادثہ کے بعد فلنگ کی مسدودی ، صارفین کو مشکلات
حیدرآباد ۔ 20 ۔ اکٹوبر : ( سیاست نیوز ) : شہر میں سربراہ کی جانے والے پکوان گیاس کے مسائل میں دن بہ دن اضافہ ہوتا جارہا ہے ۔ عید و تہوار کے موقعوں پر بروقت گیاس کی سربراہی نہیں ہورہی ہے ۔ گیاس بک کر کے 20 دن کا عرصہ گزرنے کے باوجود عدم سربراہی اور اس کے بعد بکنگ کی منسوخی عمل میں لائی جارہی ہے ۔ جس کی وجہ سے صارفین کی مشکلات میں اور اضافہ ہورہا ہے ۔ اس طرح کی صورتحال گذشتہ کئی برسوں سے چلی آرہی ہے ۔ مگر حالات میں سدھار نہ آنے کی وجہ سے صارفین بلیک میں سیلنڈرس خریدنے پر مجبور ہیں ۔ اور یہی حالات آئندہ دو ماہ تک ہوسکتے ہیں ۔ شہر اور مضافات میں کم و بیش 25 لاکھ گیاس کنکشنس ہیں اور ہر روز کمپنیوں کی جانب سے 80 ہزار تا ایک لاکھ سلنڈرس سربراہ کئے جاتے ہیں ۔ خصوصی طور پر انڈین ، بھارت اور ایچ پی گیاس کمپنیوں کی یہ ذمہ داری ہے ۔ ایک ماہ قبل چرلہ پلی میں واقع ایک گیاس کمپنی میں حادثہ پیش آنے کی وجہ سے یہاں سلنڈرس کی فلنگ مکمل طور پر بند کردی گئی ہے ۔ جس کی وجہ سے شولاپور ، کنڈا پلی اور چھتیس گڑھ کے پلانٹوں سے حیدرآباد کو سلنڈرس سربراہ کئے جارہے ہیں اور شہر میں 40 فیصد صارفین ، ایچ پی کمپنی سے تعلق رکھتے ہیں اور گیاس بک کر کے 20-15 دن گزرنے کے باوجود سلنڈرس فراہم نہیں کئے جارہے ہیں ۔ گیاس ایجنسی ڈیلرس کا کہنا ہے کہ کمپنی کی جانب سے قابل لحاظ تعداد میں سلنڈرس سربراہ نہ کئے جانے کی وجہ سے پریشانی لاحق ہورہی ہے ۔ انڈین گیاس ایجنسی کے بھی یہی حالات ہیں ۔ شہر میں اس کمپنی کا پلانٹ درست حالت میں ہونے کے باوجود کمپنی نے سلنڈرس کی سربراہی میں تخفیف کردی ہے ۔ ڈیلرس کا کہنا ہے کہ لاری مالکین کے عدم تعاون کی وجہ سے ایسے حالات درپیش ہیں ۔ انڈین گیاس ڈیلر وینکٹیش نے اعتراف کیا کہ سلنڈر میں کمی کی گئی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ صارفین کی جانب سے گیاس بک کر کے 10 دن کا عرصہ گزرنے کے باوجود انہیں سلنڈرس فراہم نہیں کرپا رہے ہیں ۔ بھارت گیاس سلنڈرس ہی ذرا جلدی فراہم کئے جارہے ہیں اور اس کمپنی کے صارفین کو بک کرنے کے 10 دن کے اندر سیلنڈرس فراہم کئے جارہے ہیں ۔ شہر میں گیاس سلنڈرس کی کمی کی وجہ سے ایجنسی مالکین کی جانب سے بلاک مارکیٹنگ کرنے کی اطلاعات ہیں اور ایجنسی مالکین فی سلنڈر پر 100 ۔ 200 روپئے زائد رقم لے کر صارفین کو فراہم کررہے ہیں ۔ ایچ پی گیاس کی سربراہی ایک اور ماہ تک متاثر رہنے کے اندریشے ظاہر کئے جارہے ہیں ۔ چرلہ پلی ، پلانٹ کا مشاہدہ کرنے والے ماہرین نے پلانٹ میں چند تبدیلیاں کرنے کی سفارش کی ہے اور اس کام کی تکمیل کے لیے ایک ماہ کا وقت لگ سکتا ہے اور اس پلانٹ کے مرمتی کاموں کی تکمیل ہونے پر بھی آسانی پیدا ہوگی جب کہ انڈین گیاس سلنڈرس کی باقاعدہ سربراہی کے لیے کم از کم اور دس دن کا وقفہ لگ سکتا ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT