Thursday , November 23 2017
Home / Top Stories / پیرس حملہ ‘ ملزمین کی تلاش میں سارے یوروپ میں دھاوے

پیرس حملہ ‘ ملزمین کی تلاش میں سارے یوروپ میں دھاوے

فرانس میں 100 افراد حراست میں ‘ 23 گرفتار ‘ بلجیم میں بھی تلاشی ‘ حملوں کی سازش شام میں رچی گئی ‘ وزیر اعظم
پیرس 16 نومبر ( سیاست ڈاٹ کام ) فرانس اور بلجیم میں درجنوں مقامات پر مشتبہ تخریب کاروں کی تلاش میں دھاوے کئے گئے جبکہ ملک میں عام حالات کو بحال کرنے کے اقدامات ہو رہے ہیں۔ وزیر اعظم فرانس نے ملک کے عوام کو خبردار کیا کہ اس طرح کے مزید حملے بھی ہوسکتے ہیں۔ سارے فرانس میں آج دو پہر میں پیرس حملوں کے مہلوکین کی یاد میں ایک منٹ کی خاموشی کا بھی اہتمام کیا گیا ۔ سارے فرانس میں جو فرد جہاں تھا وہ اپنے مقام پر رک گیا ۔ خود فرانس کے صدر فرینکوئی اولاند نے بھی مہلوکین کی یاد میں خاموشی منائی ۔ علاوہ ازیں ان حملوں کی تحقیقات کرنے والے حکام نے مزید دو حملہ آوروں کی نشاندہی کی ہے جن میں ایک فرانسیسی شہری بھی شامل ہے جس پر ایک دہشت گردانہ حملہ کی منصوبہ بندی کرنے کا پہلے بھی الزام عائد کیا جاچکا ہے ۔ اس کے علاوہ ایک خود کش بمبار کا بھی پتہ چلایا گیا ہے جس کا پاسپورٹ شامی بتایا گیا ہے ۔ حالانکہ ابھی اس پاسپورٹ کی توثیق نہیں ہوسکی ہے ۔ علاوہ ازیںفرانس کے وزیر اعظم مانیول والس نے کہا کہ پیرس میں حملوں کی منصوبہ بندی شام میں کی گئی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ان منصوبوں کی سازش اور منصوبہ بندی شام میں ہوئی ہے اور بلجیم میں اس کو آگے بڑھایا گیا اور فرانس میں اس پر عمل کیا گیا جس میں ایک فرانسیسی شہری کی مدد بھی شامل ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہم ان تمام افراد سے پوچھ تاچھ کے اقدامات کر رہے ہیں جو انقلابی جہادی تحریک کا حصہ رہے ہیں۔ یا پھر جنہوں نے ملک کے خلاف نفرت پھیلائی ہے ۔ اب تک اس سلسلہ میں نو افراد کو گرفتار کیا گیا ہے جن میں پانچ کی نشاندہی ہفتے کو ہو گئی تھی ، پیر کو مزید دو افراد کو گرفتار کیا گیا جن کی شناخت احمد المحمد اور سمیع امیمور بتائے گئے ہیں۔ کہا گیا ہے کہ احمد المحمد کا پاسپورٹ شامی تھا اور یہ ایک حملہ آور کی نعش کے قریب سے دستیاب ہوا تھا ۔ کہا گیا ہے کہ جب تک جن حملہ آوروں کی شناخت ہوئی ہے ان کی اکثریت یوروپ سے تعلق رکھتی ہے ۔ امیمور پر پہلے بھی فرانس میں دہشت گردی کے الزامات عائد کئے جاچکے ہیں۔ پولیس ذرائع نے کہا کہ پیرس حملوں کے بعد ایک شخص مفرور ہے جس کی شناخت صالح عبدالسلام کی حیثیت سے شناخت کی گئی ہے فرانس میں پولیس نے کئی مقامات پر دھاوے کئے ہیں جبکہ بلجیم کی پولیس نے ریاڈیکل افراد کا مرکز سمجھے جانے والے مقامات پر دھاوے شروع کردئے ۔ وزیر داخلہ فرانس نے بتایا کہ اب تک جملہ 100 افراد کو گھروں پر نظربند کردیا گیا ہے اور 23 کو گرفتار کرلیا گیا ہے ۔ 31 ہتھیار ضبط کئے گئے ۔ فرانس میں عوام معمولی زندگی کی سمت لوٹ رہے ہیں ۔ پیرس کی جامع مسجد ( گریٹ مسجد ) کے امام دلیل ابو بکر نے فرانس کے سارے آئمہ سے اپیل کی ہے کہ وہ جمعہ کو ہوئے حملہ کے مہلوکین کیلئے دعادں کا اہتمام کریں۔ اب تحقیقات میں ساری توجہ بلجیم پر مرکوز ہوگئی ہے ۔ آج بلجیم کی پولیس نے صالح عبدالسلام کی تلاش میں بروسلز میں بڑا دھاوا کیا لیکن کوئی گرفتاری نہیں ہوسکی ۔ پولیس نے صالح عبدالسلام کے بھائی کو ‘ جسے حراست میں لیا گیا تھا ‘ کسی الزام کے بغیر رہا کردیا ۔

TOPPOPULARRECENT