پیر کو صدر جمہوریہ کا پارلیمنٹ سے خطاب

تعلیمی شعبہ میں اصلاحات اور نئے پروگرامس کا امکان

تعلیمی شعبہ میں اصلاحات اور نئے پروگرامس کا امکان
نئی دہلی 5 جون ( سیاست ڈاٹ کام ) صدر جمہوریہ پرنب مکرجی امکان ہے کہ آئندہ پیر کو پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے اپنے خطاب کے دوران تعلیمی شعبہ میں بڑے پیمانے پر اصلاحات اور نئے پروگرامس کا اعلان کرینگے ۔ صدارتی خطبہ میں دوسری اہم باتوں کے علاوہ نریندر مودی حکومت کے تعلیمی شعبہ کیلئے ایجنڈہ کو خاص طور پر واضح کیا جائیگا اور اعلی تعلیم کو مستحکم کرنے اور معیاری بنانے کیلئے حکومت کی ترجیحات بھی پیش کی جائیں گی ۔ وزارت فروغ انسانی وسائل کے سینئر عہدیداروں نے یہ بات بتائی ۔ مرکزی وزیر فروغ انسانی وسائل سمرتی ایرانی اس سلسلہ میں وزارت کے عہدیداروں اور مختلف اہم شخصیات سے تبادلہ خیال کر رہی ہیں

تاکہ پارٹی کے ویژن کو اس میں شامل کیا جاسکے ۔۰ امکان ہے کہ سمرتی ایرانی صدر جمہوریہ کے خطبہ کے بعد حکومت کی پہل اور ترجیحات کو تفصیل کے ساتھ پیش کرینگے ۔ عہدیداروں نے بتایا کہ صدارتی خطاب میں تعلیمی شعبہ میں بڑے پیمانے پر اصلاحات اور نئے پروگراموں کو شامل کیا جاسکتا ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ صدارتی خطبہ میں اعلی تعلیم کو مستحکم کرنے اور اسے معیاری بنانے کیلئے نئے پروگرامس پیش کئے جاسکتے ہیں جو یونیورسٹی سطح کے ہوسکتے ہیں۔ اس کے علاوہ ملک کے اہم تعلیمی اداروں جیسے آئی آئی ٹیز کو عالمی رینکنگ کی فہرست میں لانے کیلئے بھی اقدامات پر توجہ دی جاسکتی ہے ۔ دہلی یونیورسٹی کے متنازعہ چار سالہ انڈر گریجویٹ پروگرام کا خطبہ میں حوالہ دیا جاسکتا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT