پیس کی ٹیم میں واپسی ،عالمی ریکارڈکا امکان

نئی دہلی۔12مارچ (سیاست ڈاٹ کام )ہندوستان کے سب سے تجربہ کار ٹینس کھلاڑی لینڈر پیس چین کے خلاف تینجن میں چھ اور سات اپریل کو ہونے والے ڈیوس کپ ایشیا اوشیانا زون گروپ ایک کے مقابلے میں نیا عالمی ریکارڈ بنا سکتے ہیں۔پیس اگر اس مقابلے میں ڈبلز میچ میں کھیلنے اترتے ہیں اور اپنے میچ میں کامیابی حاصل کرتے ہیں تو وہ ڈیوس کپ کی تاریخ کے سب سے زیادہ کامیاب ڈبلز کھلاڑی بن جائیں گے ۔44 سال کے پیس کی ہندوستانی ڈیوس کپ ٹیم میں واپسی ہوئی ہے ۔آل انڈیا ٹینس اسوسی ایشن (اے آئی ٹی اے ) نے تجربہ کار کھلاڑی پیس کو ڈبلز ماہر روہن بوپنا کے اعتراض کے باوجود ہندستانی ٹیم میں شامل کیا ہے ۔اے آئی ٹی اے کی سلیکشن کمیٹی نے پیس کو شامل کرتے ہوئے واضح کیا تھا کہ انتخاب میںکھلاڑیوں کی مداخلت قبول نہیں ۔پیس کو اب ایک موقع ملا ہے کہ وہ ڈبلز میں نیا عالمی ریکارڈ قائم کریں۔اس سے پہلے پیس کینیڈا کے خلاف ڈیوس کپ ورلڈ گروپ پلے آف میچ میں ٹیم کا حصہ نہیں تھے ۔ڈیوس کپ کا یہ مقابلہ نئے طرز میں کھیلا جائے گا اور یہ تین دن کے بجائے دو دنوں میں ہو گا۔ ہندستان کے سب سے زیادہ کامیاب ڈیوس کپ کھلاڑی پیس نے اپنے شاندار کیریئر میں ڈیوس کپ میں جملہ90 میچ جیتے ہیں اور35 میں شکست ہوئی ہے۔انہوں نے سنگلز میں 48 میچ جیتے ہیں اور 22 مقابلوںمیں ناکام ہوئے ہیں جبکہ ڈبلز میں انہوں نے 42 میچ جیتے ہیں اور13 ہارے ہیں۔اٹلی کے نکولا پترانگلي کے نام سب سے زیادہ ڈبلز جیت کا ریکارڈ ہے ۔پترانگلي نے ڈیوس کپ میں جملہ 120 میچ جیتے ہیں اور 44 ہارے ہیں۔انہوں نے سنگلز میں 78 میچ جیتے ہیں اور 32 ہارے ہیں جبکہ ڈبلز میں انہوں نے 42 میچ جیتے ہیں اور 12 ہارے ہیں۔پیس اگر چین کے خلاف ڈبلز مقابلے میں اترتے ہیں اورکامیابی حاصل کرتے ہیں تو وہ نئی تاریخ بنا دیں گے ۔پیس کے کیریئر کا یہ 56 واں ڈیوس کپ ٹورنمنٹ ہوگا جبکہ اطالوی کھلاڑی نے اپنے کیریئر میں 66 ڈیوس کپ ٹورنمنٹ کھیلے تھے ۔

TOPPOPULARRECENT