Saturday , June 23 2018
Home / شہر کی خبریں / پیناسونک کی نانو ٹیکنالوجی والے ایرکنڈیشنر کی لانچنگ

پیناسونک کی نانو ٹیکنالوجی والے ایرکنڈیشنر کی لانچنگ

حیدرآباد۔ 14 مارچ (پریس نوٹ) پیناسونک انڈیا نے اپنے اس وعدہ کی تکمیل کرتے ہوئے کہ انڈور ہوا کی کوالٹی میں بہتری پیدا کی جائے گی، انورٹر ایرکنڈیشنرس جس میں اس کے اندر ہی ہوا کو خالص بنانے کا سسٹم جسے نانو کہا جاتا ہے، نصب ہے۔ ہوا کے غیرضروری ذرات کو صاف کرتے ہوئے 99% خالص ہوا سے گھر اور دفتر کا ماحول تر و تازہ ہوجاتا ہے۔ کمپنی نے ایرکنڈیشنر کے شعبہ میں اپنا 60 واں سال مکمل کرلیا ہے۔ نئی ٹیکنالوجی ’’نانو‘‘ کے ساتھ مارکیٹ میں آنے والے ایرکنڈیشنرس میں ایروونگس بھی ہوں گے جس کے تحت تاحیات معیاری ہوا حاصل کی جاسکے گی۔ ایرپیوریفارئنگ انورٹرایرکنڈیشنرس شہر کے تمام آؤٹ لیٹس میں 39,000 روپئے تا 72,000 روپئے میں 0.8T، 1.0T، 1.5T اور 2.0T کے زمروں میں دستیاب ہیں۔ یاد رہے کہ کبھی کبھی باہر کی آلودگی سے زیادہ خطرناک گھر کے اندر کی آلودگی ہوتی ہے لہذا صارفین کی تبدیل ہوتی ہوئی ذہنیت کو مدنظر رکھتے ہوئے جاپان کی ایرکنڈیشنڈ مارکٹ میں پیناسونک کو نمبر 1 تصور کیا جاتا ہے جو اس جانب زائد توجہ دیتا ہے کہ گھروں کے اندر رہنے والے سانس لیں تو انہیں خالص ہوا ملے۔ ہوا کو خالص بنانے کے لئے نانو ٹیکنالوجی کا استعمال کیا گیا ہے جو پانی کے چھوٹے چھوٹے قطروں کو منجمد کرنے کی حد تک ٹھنڈا کرتی ہے اور بیکٹیریا کو روکتی ہے جبکہ وائرس کو بڑھنے سے بھی روکتی ہے اور 99% دھول مٹی کا صفایا کرتی ہے۔ اس ایرکنڈیشنر میں ایروونگس ہیں جس سے ٹھنڈک میں اضافہ ہوتا ہے۔ جس میں ایک ایسے پنکھے کا استعمال کیا گیا ہے جو دفتر یا گھر میں زائد علاقہ کا احاطہ کرتا ہے اور صارفین کو زیادہ سے زیادہ آرام کا احساس ہوتا ہے۔ لانچنگ کے موقع پر پیناسونک انڈیا کے ایرکنڈیشنرس گروپ کے بزنس ہیڈ مسٹر گورو شاہ نے اپنے خطاب کے دوران کہا کہ پیناسونک ایک ایسی کمپنی ہے جو ہمیشہ ہوا کے معیار میں بہتری لانے کے لئے عصری ٹیکنالوجی کا استعمال کرتی ہے جس کا سلسلہ گزشتہ 60 سال سے جاری ہے۔ اب جبکہ ہندوستان میں فضائی آلودگی کا معیار روز بہ روز گرتا جارہا ہے لہذا ہوا کو خالص بنانے کی ضرورت محسوس کی جانے لگی اور اس مسئلہ کی یکسوئی کے لئے پیناسونک اپنے وعدہ کا پابند ہے اور آزمودہ نانو ٹیکنالوجی اور ایروئنگ ڈیزائن کے ذریعہ ہندوستانی گھروں میں خالص ہوا پہنچا رہا ہے لہذا اس رینج کے ذریعہ موسم گرما میں پیناسونک کو 1500 کروڑ روپئے کے کاروبار کی توقع ہے جبکہ جنوبی مارکیٹ میں مالیاتی سال 2018-19ء کیلئے 20% فروغ کا نشانہ بھی مقرر کیا گیا ہے۔ اس طرح پیناسونک نے انورٹر رینج ’’ایرو سیریز‘‘ کو بھی منظر عام پر لانے کا فیصلہ کیا ہے جس میں ایروسلم ڈیزائن ہوگی اور ٹھنڈک تیزی سے پیدا ہوگی جبکہ توانائی کے 65% اسراف میں کمی ہوگی۔

TOPPOPULARRECENT