Wednesday , January 24 2018
Home / سیاسیات / پیڈ نیوز کو انتخابی جرم قرار دینے الیکشن کمیشن کی خواہش

پیڈ نیوز کو انتخابی جرم قرار دینے الیکشن کمیشن کی خواہش

نئی دہلی 5 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) پیڈ نیوز کی لعنت کو محسوس کرتے ہوئے الیکشن کمیشن نے حکومت کو تجویز پیش کی ہے کہ اِسے ایک انتخابی جرم قرار دیا جائے۔ چاہے امیدواروں کے اخراجات پر نگرانی کے ذریعہ اِس سے نمٹنا جاری رکھا جائے۔ لوک سبھا انتخابات کے پروگرام کا اعلان کرنے کے لئے ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے چیف الیکشن کمشنر وی ایس سمپت

نئی دہلی 5 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) پیڈ نیوز کی لعنت کو محسوس کرتے ہوئے الیکشن کمیشن نے حکومت کو تجویز پیش کی ہے کہ اِسے ایک انتخابی جرم قرار دیا جائے۔ چاہے امیدواروں کے اخراجات پر نگرانی کے ذریعہ اِس سے نمٹنا جاری رکھا جائے۔ لوک سبھا انتخابات کے پروگرام کا اعلان کرنے کے لئے ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے چیف الیکشن کمشنر وی ایس سمپت نے کہاکہ پیڈ نیوز کے 3 پہلو ہیں، اخبارات، برقی ذرائع ابلاغ اور امیدواروں کے اخراجات۔ اُنھوں نے کہاکہ چونکہ (پیڈ نیوز سے نمٹنے) کوئی قانون موجود نہیں ہے اِس لئے الیکشن کمیشن نے وزارت قانون کو ایک تجویز پیش کی ہے کہ اِسے انتخابی جرم قرار دیا جائے۔ اُنھوں نے کہاکہ الیکشن کمیشن اِس لعنت سے امیدواروں کے اخراجات پر گہری نگرانی رکھتے ہوئے نمٹنے کی کوشش کرے گا۔ اُنھوں نے کہاکہ الیکشن کمیشن کے اختیار میں جو کچھ ہے وہ کیا جارہا ہے۔ ہم ریاستی اور ضلعی کمیٹیوں کی نگرانی کررہے ہیں۔ ہم نے متعلقہ امیدواروں کے اخراجات کے اکاؤنٹ میں خرچ کا اضافہ کردیا ہے۔ اخبارات میں پیڈ نیوز کے بارے میں شکایت پر اُنھوں نے کہاکہ تمام معاملات پریس کونسل آف انڈیا کے سپرد کئے جارہے ہیں۔ جہاں تک برقی ذرائع ابلاغ میں پیڈ نیوز کے بارے میں شکایات کا سوال ہے، زیادہ تر واقعات قومی نشریاتی اسوسی ایشن کو سپرد کئے جاچکے ہیں۔ اوپینین پولس پر امتناع عائد کرنے کے مطالبات کے بارے میں سوال کا جواب دیتے ہوئے چیف الیکشن کمشنر نے کہاکہ اِس کا فیصلہ کرنا پارلیمنٹ کی ذمہ داری ہے۔ اُنھیں قانون سازی کا اختیار حاصل ہے۔

TOPPOPULARRECENT