Tuesday , December 12 2017
Home / کھیل کی خبریں / پے در پے شکست کے باوجود ٹینس کی رانی ، تخت و تاج چھوڑنے تیار نہیں

پے در پے شکست کے باوجود ٹینس کی رانی ، تخت و تاج چھوڑنے تیار نہیں

35 ویں سالگرہ سے قبل فرینچ اوپن میں شکست کے بعد سرینا کو ومبلڈن میں کامیابی کی امید
پیرس ۔ /5 جون (سیاست ڈاٹ کام) ایک ایسے وقت جب سرینا ولیمس اپنی 35 ویں سالگرہ کے قریب پہونچ رہی ہیں اور اپنے کیرئیر میں پہلی مرتبہ گرینڈ سلام فائینلس میں پے در پے شکست سے دوچار ہورہی ہیں لیکن ایسا محسوس ہوتا ہے کہ امریکی سوپر اسٹار ٹینس کا دنیا کا تخت و تاج چھوڑنے کیلئے ہنوز تیار نہیں ہیں ۔ 22 گرینڈ سلام خطاب حاصل کرنے اسٹیفی گراف کا ریکارڈ برابر کرنے کی کوشش میں سرینا ولیمس کو گزشتہ روز فرینچ اوپن میں بھی ناکامی ہوئی اور ان کی حریف گاربائین مگوروزا نے فرینچ اوپن ٹائیٹل جیت لیا ۔ اس طرح جنوری بھی ایک کم معروف ٹینس کھلاڑی رینجلک کربر نے امریکی ٹینس اسٹار ولیمس سے آسٹریلین اوپن چمپئین کا خطاب چھین لیا ۔ اس سے قبل ستمبر کے دوران نئے موسم میں گرینڈ سلام کیلئے کامیاب سفر کے آغاز کیلئے سرینا کی امیدوں پر اٹلی کی جونیر کھلاڑی راپر ٹاؤنس نے محض سیمی فائنلس میں شسکت دیتے ہوئے پانی پھیر دیا تھا ۔ چنانچہ جیت کی عادی سرینا ولیمس کی فتوحات کا سزا تاحال 21 ویں گرینڈ سلام کامیابی پر ہی موقوف ہوگیا ہے ۔ لیکن سرینا ولیمس کے لئے یہیں پر سب کچھ ختم نہیں ہوگیا بلکہ وہ اندرون تین ہفتے شروع ہونے والے ساتویں ومبلڈن میں کامیابی کیلئے ایک پسندیدہ کھلاڑی کی حیثیت سے اپنی کامیابیوں کا سفر دوبارہ شروع کرنا چاہتی ہیں ۔ 2002 ء ، 2013 ء اور 2015 ء میں تین فرینچ اوپن گرینڈ سلام ٹائیٹلس حاصل کرنے والی سرینا نے چوتھے مقابلہ سے قبل کہا تھا کہ ’’میں صرف ایک ہی کام کرسکتی ہوں اور کوشش جاری رکھنا ہی میرا کام ہے ‘‘ ۔ سرینا ولیمس ماضی میں بھی کئی نشیب و فراز سے گزر چکی ہیں ۔ لیکن ہارنے کے بعد وہ جیتنا بھی جانتی ہیں ۔ 2011 ء میں سرینا کے پاؤں کی دو مرتبہ سرجری ہوئی تھی ۔ علاوہ ازیں شش میں خون کے انجماد جیسے جان لیوا مرض کا بھی وہ کامیابی سے مقابلہ کرچکی ہیں ۔
اس سال کھیلوں سے باہر رہنے کے سبب عالمی رینکنگ میں وہ 103 ویں مقام پر پہونچ گئی تھیں ۔ 2014 ء میں انہیں آسٹریلین اوپن کے چوتھے راؤنڈ کے علاوہ فرینچ اوپن کے دوسرے اور ومبلڈن کے تیسرے راؤنڈ میں شکست ہوگئی تھی لیکن یو ایس اوپن میں شاندار کامیابی کے ساتھ انہوں نے فتوحات کے سفر کا دوبارہ آغاز کیا تھا ۔

TOPPOPULARRECENT