Saturday , April 21 2018
Home / ہندوستان / ’’چائے والا کی دانست میں پکوڑے بیچنا روزگار ‘‘

’’چائے والا کی دانست میں پکوڑے بیچنا روزگار ‘‘

نئی دہلی ۔ 22 جنوری ۔(سیاست ڈاٹ کام) پاٹیدار لیڈر ہاردیک پٹیل نے آج وزیراعظم نریندر مودی کو اُن کے ایک تبصرے پر تنقید کانشانہ بنایا جو اُنھوں نے ایک نیوز چینل کو انٹرویو کے دوران کیا ہے ۔ ہفتہ کو نشر انٹرویو کے دوران روزگار کے بارے میں سوال کا جواب دیتے ہوئے وزیراعظم مودی نے استفسار کیا تھاکہ اگر کوئی شخص زی ٹی وی آفس کے باہر پکوڑے بھی فروخت کرلیتا ہے تو وہ دن بھر کے اختتام پر دو سو روپئے کے ساتھ اپنے گھر واپس ہوسکتا ہے ، کیا یہ روزگار نہیں ہے ؟ اس پر ہاردیک نے ٹوئٹر کے ذریعہ اپنے ردعمل میں کہا کہ صرف چائے والا ہی اس قسم کی تجویز دے سکتا ہے کہ کوئی بیروزگار نوجوان ہے تو وہ لبِ سڑک پکوڑے فروخت کرنے کیلئے ٹھیلہ بنڈی لگالے ،کوئی ماہر معاشیات ہرگز اس قسم کا حل نہیں نکالے گا ۔ مودی کو 2014 ء کے عام انتخابات سے قبل سے ہی چائے والا کے طنز کا سامنا ہوتا رہا ہے کیونکہ اُنھوں نے اپنی انتخابی مہم کے دوران فخریہ انداز میں بتایا تھا کہ گجرات میں کبھی وہ چائے بیچا کرتے تھے ۔ وہ ووٹروں کے ساتھ اور خاص طورپر عام آدمی کے ساتھ بہتر تال میل کی کوشش میں اس بات کابار بار ذکر کرنے لگے تھے ۔ تب سے اپوزیشن کے لیڈروں نے اُنھیں ’’چائے والا ‘‘ کے حوالے سے تنقیدوں کا نشانہ بنایاہے۔

TOPPOPULARRECENT