Wednesday , April 25 2018
Home / شہر کی خبریں / چارمینار اور قلعہ گولکنڈہ کی خانگی شعبہ سے نگہداشت

چارمینار اور قلعہ گولکنڈہ کی خانگی شعبہ سے نگہداشت

حکومت کا منصوبہ ، جائزہ کمیٹیوں کی تشکیل ، خانگی اداروں سے ذرائع آمدنی بنانے کے اقدامات
حیدرآباد۔4اپریل(سیاست نیوز) تاریخی چارمینار اور گولکنڈہ قلعہ کی بہتر نگہداشت کے لیے خانگی شعبہ کے حوالے کرنے کی تجویز ہے ۔ حکومت نے جو منصوبہ تیار کیا ہے اس کے مطابق اب ان عمارتوں کو خانگی کنٹرول میںدینے کا فیصلہ کیا گیا ہے اور عمل کا جائزہ لینے کے لئے کمیٹیاں بھی تشکیل دی جا چکی ہیں۔حکومت تلنگانہ کے محکمہ سیاحت کی جانب سے تیار کئے گئے منصوبہ کے مطابق ریاست میں تین تاریخی عمارتوں چارمینار‘ گولکنڈہ اور رامپا مندر کی عمارتوں کو خانگی کمپنیوں کے زیر انتظام دینے کا فیصلہ کیا گیا ہے تاکہ ان عمارتوں کے اطراف و اکناف سیاحوں کو بنیادی سہولتوں کی فراہمی اور ان عمارتوں کے اطراف ماحولیات کی نگہداشت کو یقینی بنایا جائے ۔حکومتوں کی جانب سے اب تک سرکاری شعبہ ٔ جات کو خانگیانے کی پالیسی اختیار کی جاتی تھی اور خانگی اداروں کے حوالہ کرتے ہوئے آمدنی میں اضافہ کے اقدامات کئے جاتے تھے لیکن اب تاریخی عمارتوں کے انتظامی امور کو بھی خانگی ادارو ں کے حوالہ کرنے کی نئی روایات شروع ہونے جا رہی ہیں۔ باوثوق ذرائع سے موصولہ اطلاعات کے مطابق ریاست تلنگانہ کی ان تین اہم تاریخی عمارتوں میں دو عمارتوں کو جی ایم آر کے حوالہ کرنے کا منصوبہ ہے جبکہ ایک عمارت کو آئی ٹی سی کے حوالہ کرنے کا فیصلہ کیا جاچکا ہے۔ ذرائع کے مطابق تاج فلک نما پیالس ہوٹل چلانے والے ادارہ آئی ٹی سی نے چارمینار کے اطراف سیکیوریٹی کی فراہمی ‘ بنیادی سہولتوں کی فراہمی کے علاوہ دیگر ضروریات کی فراہمی کے انتظامات کا منصوبہ تیار کرلیا ہے اور کہا جارہا ہے کہ ریاستی حکومت ‘ محکمہ سیاحت اور آئی ٹی سی کے ذمہ داروں اور ماہرین پر ایک کمیٹی بھی تشکیل دی جا چکی ہے جو چارمینار کے اطراف کے ماحول کی نگہداشت کے علاوہ سہولتوں کی فراہمی کا جائزہ لے گی۔ اسی طرح گولکنڈہ کے علاوہ تاریخی رامپا مندر کے اطراف کے امور جی ایم آر کے حوالہ کئے جانے کا منصوبہ ہے اور اس سلسلہ میں جی ایم آر کی جانب سے دونوں عمارتوں کے حصول کے سلسلہ میں کمیٹی تشکیل دیتے ہوئے جائزہ لیا جانے لگا ہے۔ بتایاجاتاہے کہ دونوں خانگی کمپنیو ںکی جانب سے ان تینوں عمارتوں کی نگہداشت اور اطراف کے ماحو ل کو خوبصورت بنانے اور بہتر و معیاری سیکیوریٹی کی فراہمی کے سلسلہ میں 10 اپریل تک رپورٹ پیش کردی جائے گی۔ محکمہ سیاحت کی جانب سے ان تینوں عمارتوں کی نگہداشت کے امور اگر خانگی کمپنیوںکے حوالہ کئے جاتے ہیں تو ایسی صورت میں اطراف کے ماحول میں بہتری پیدا ہوگی لیکن اگر ان خانگی کمپنیوں کی جانب سے ٹکٹ کی وصولی کا فیصلہ کیا جاتا ہے تو ایسی صورت میں عوام کی شدید برہمی کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔ چارمینار پیدل راہرو پراجکٹ کے حدود میں نگہداشت کے تمام امور آئی ٹی سی کے حوالہ کردیئے جائیں گے اور قلعہ گولکنڈہ و رامپا مندر کے امور جی ایم آر کے حوالہ کئے جائیں گے۔ یہ خانگی کمپنیاں ان تاریخی عمارتوں کی اور ان کے اطراف کے ماحول کی بہتری ‘ صیانتی امور اور صفائی کے علاوہ ماحولیات کو بہتر بنانے کے ذمہ داری پوری کریں گی۔

TOPPOPULARRECENT