Sunday , January 21 2018
Home / شہر کی خبریں / چارمینار تا شاہ علی بنڈہ مجلس بلدیہ کی انہدامی کارروائی

چارمینار تا شاہ علی بنڈہ مجلس بلدیہ کی انہدامی کارروائی

حیدرآباد 23 ستمبر (سیاست نیوز) چارمینار تا شاہ علی بنڈہ مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کی جانب سے بڑے پیمانے پر انہدامی کارروائی کا سلسلہ آج بھی جاری رہا۔ کئی فٹ پاتھوں پر موجود چھوٹے کاروباریوں کو برخواست کرنے کے ساتھ ساتھ جن تاجرین کی دکانوں کے سائن بورڈ وغیرہ آگے نکلے ہوئے تھے انہیں بھی نکال دیاگیا۔ مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کی جا

حیدرآباد 23 ستمبر (سیاست نیوز) چارمینار تا شاہ علی بنڈہ مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کی جانب سے بڑے پیمانے پر انہدامی کارروائی کا سلسلہ آج بھی جاری رہا۔ کئی فٹ پاتھوں پر موجود چھوٹے کاروباریوں کو برخواست کرنے کے ساتھ ساتھ جن تاجرین کی دکانوں کے سائن بورڈ وغیرہ آگے نکلے ہوئے تھے انہیں بھی نکال دیاگیا۔ مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کی جانب سے بھاری پولیس بندوبست کے ساتھ ہوئی کارروائی کا متاثرین بے بسی کے عالم میں مظاہرہ کررہے تھے چونکہ ان کی مدد کیلئے کوئی موجود نہیں تھا۔ بلدی عہدیداروں کی جانب سے کی جانے والی من مانی پر عوام خاموش تماشائی بنے ہوئے تھے جبکہ متاثرین کچھ بھی کہنے سے قاصر تھے۔ چارمینار تا شاہ علی بنڈہ جن جائیدادوں کو نشانہ بنایا گیا ہے ان جائیدادوں کے مالکین و کرایہ داروں نے اس بات کی شکایت کی کہ بلدیہ کی جانب سے کسی قسم کی پیشگی اطلاع یا نوٹس نہیں دی گئی اور بڑے پیمانے پر شروع کی گئی اس کارروائی میں پولیس کی بھاری جمعیت کو تعینات کرتے ہوئے عوام کو خوفزدہ کردیا گیا۔ کئی متاثرین نے سردار محل پہنچ کر بلدی عہدیداروں سے رابطہ قائم کرتے ہوئے وقت طلب کرنے کی کوشش کی لیکن وہاں موجود افراد نے واضح کردیا کہ مزید کوئی وقت دینے کی گنجائش باقی نہیں ہے۔ بعض تجارتی اداروں میں سامان موجود ہونے کے باعث مالکین کو کافی نقصان اٹھانا پڑا ہے لیکن ان کا بھی کوئی پرسان حال نہیں ہے۔ چارمینار بس اسٹانڈ کے فٹ پاتھ پر موجود چھوٹے بیوپاریوں کے کاروبار کو بھی جے سی بی کے ذریعہ نکال پھینکا گیا۔ اسی طرح مغل پورہ کمان سے متصل ملگیات کے سائن بورڈس اور باہر نکلے ہوئے ٹین شیڈس کو بھی نکال دیا گیا۔ پٹرول پمپ کو بھی جزوی طور پر منہدم کرنے کی کوشش کی گئی جبکہ پستہ ہاوز کے قریب چپلوں کی دکان کے علاوہ دیگر تجارتی اداروں کو زبردستی ہٹا دیا گیا ۔ نایاب فنکشن ہال کے روبرو واقع عمارت کے اطراف موجود چبوترے کو پوری طرح سے منہدم کردیا گیا ۔ متاثرین نے اس بات کی شکایت کی کہ مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کی جانب سے غیر مجاز قبضہ جات کی برخواستگی کے نام پر یہ کارروائیاں انجام دی جارہی ہے جبکہ سیاسی اثر رکھنے والوں کی جانب سے غیر مجاز تعمیرات کا سلسلہ اب بھی جاری ہے لیکن عہدیدار ان کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کررہے ہیں۔ متاثرین نے بلدیہ کی اس کارروائی کے خلاف مقامی منتخبہ عوامی نمائندوں کو مطلع کیا تو نمائندوں نے واضح طو رپر یہ جواب دیدیا کہ عرصہ دراز سے تعطل کا شکار پراجکٹ اب تکمیل کی سمت رواں دواں ہیں ایسے میں وہ اس طرح کی کارروائیوں میں مداخلت نہیں کرپائیں گے ۔ مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کے عہدیداروں نے بتایا کہ چارمینار تا شاہ علی بنڈہ سڑک کے بعد چارمینار تا چوک براہ لاڈ بازار موجود غیر مجاز قبضہ جات کی برخواستگی کے سلسلہ میں کارروائیوں کا آغاز ہوگا ۔ مسٹر بالا سبرامنیم ریڈی زونل کمشنر مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد ساوتھ زون نے بتایا کہ لاڈ بازار تا چوک 100 دکانوں کے مالکین کو اس بات سے واقف کروادیا گیا ہے کہ وہ اپنی حقیقی جگہ سے آگے بڑھتے ہوئے سڑک پر آچکے ہیں۔ ان کے بموجب تاجرین نے بلدیہ کو اس بات کی طمانیت دی کہ وہ اپنے طور پر جو سڑک پر تعمیرات ہوئی ہیں انہیں منہدم کرلیں گے۔ زونل کمشنر نے بتایا کہ اندرون دو یوم لاڈ بازار میں تاجرین کی جانب سے اگر غیر مجاز قبضہ جات کی برخواستگی عمل میں نہیں آتی تو مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کی جانب سے بڑے پیمانے پر کارروائی کرتے ہوئے ان قبضہ جات کو برخواست کروادیا جائے گا۔چارمینار تا شاہ علی بنڈہ کی گئی کارروائی سے متاثر ہونے والے افراد نے بتایا کہ ان کے روزگار ان ہی چھوٹے موٹے کاروباروں سے جڑے ہوئے تھے۔ اب جبکہ بلدیہ نے ان کے روزگار چھین لئے ہیں تو وہ بالکلیہ طور پر بے روزگار ہوچکے ہیں ۔ ایسی صورت میں مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد اور حکومت کو چاہئے کہ متاثرین کی فوری باز آبادکاری کیلئے متبادل جگہ کی فراہمی کا اعلان کریں بصورت دیگر شہر میں بیروزگاروں کی تعداد میں اضافہ ہی ہوتا چلا جائے گا چونکہ ایک شخص کے بیروزگار ہونے کے اثرات پورے خاندان پر مرتب ہوتے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT