Thursday , June 21 2018
Home / شہر کی خبریں / چارمینار کی تصویر پر ہنومان کی مورتی

چارمینار کی تصویر پر ہنومان کی مورتی

سٹی پولیس کانسٹیبل کی شر انگیزی ایم بی ٹی قائدین کا احتجاج،کارروائی کا مطالبہ

سٹی پولیس کانسٹیبل کی شر انگیزی ایم بی ٹی قائدین کا احتجاج،کارروائی کا مطالبہ
حیدرآباد 15 جنوری (سیاست نیوز) سٹی پولیس کے ایک کانسٹبل کی اشتعال انگیزی کے خلاف مجلس بچاو تحریک نے برہمی کا اظہار کیا ہے۔ مذہبی جذبات کو مجروح کرنے اور امن کے شہر میں فرقہ وارانہ ماحول پیدا کرتے ہوئے ماحول کو بگاڑنے کی کوشش کے خلاف ایم بی ٹی نے اپنا احتجاج درج کروایا ہے۔ سٹی پولیس میں ایسے عناصر کی موجودگی کے خلاف سابق کارپوریٹر اعظم پورہ ڈیویژن مسٹر امجد اللہ خان خالد نے دبیر پورہ پولیس میں آج رات شکایت درج کروادی اور کمشنر پولیس سے درخواست کی کہ وہ فوری سخت سے سحت کارروائی کرتے ہوئے پولیس کی ساکھ کو متاثر ہونے سے بچائیںاور ایسے فرقہ پرست عناصر کے خلاف اقدامات کریں ۔ بتایاجاتا ہے کہ سریندر سنگھ نامی پولیس کانسٹیبل جو سلطان بازار پولیس اسٹیشن سے وابستہ بتایا گیا ہے ۔ اس نے اپنے فیس بُک پیج پر تاریخی چارمینار کوپوسٹ کیا ہے جس میں چارمینار کی پہلی منزل پر ہنومان کی تصویر لگا کر قابل اعتراض نعرہ درج کئے ہیں اور اپنے ساتھیوں کو نئی صبح کا پیغام دے رہا ہے ۔ امجد اللہ خان خالد نے کہا کہ مذہبی منافرت پھیلانے کی اس کوشش کو کسی بھی صورت میں برداشت نہیں کیا جاسکتا ۔ مجلس بچاو تحریک نے ہمیشہ ایسی فرقہ پرست ذہنیت کے حامل وردی والوں کا پیچھا کیا ہے اور آئندہ بھی امن و امان کے حق میں اپنی تحریک کو جاری رکھے گی ۔ انہوں نے ایک پولیس کانسٹیبل کی جانب سے اشتعال انگیزی پر افسوس کا اظہار کیا اور کہا کہ محکمہ پولیس میں ایسے ملازمین کی موجودگی حکومتوں کی نیت پر سوالیہ نشان بن سکتی ہے اور حکومت کے سیکولر کردار کو متاثر کرسکتی ہے جس سے کہ مذہبی جذبات مجروح ہوتے ہیں۔ انہو ںنے اپنے بیان میں کمشنر پولیس کو سابقہ فسادات اور امن کو بگاڑنے کے حرکات کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ سابق میں بھی اس طرح کی پوسٹنگ اور حرکتوں کے ذریعہ فسادات برپا کئے گئے ۔ انہوں نے کمشنر پولیس کو یادہانی کرواتے ہوئے کہا کہ چارمینار ایک تاریخی عمارت ہے جس کی دوسری منزل پر مسجد ہے اور عمارت میں پنجتن پاک کی نشانیاں ہے اور ایسی حرکات ناقابل برداشت ہیں ۔ انہوں نے کمشنر پولیس سے درخواست کی کہ وہ فوری اس ملازم کے خلاف کارروائی کریں۔ امجد اللہ خاں خالد نے فیس بُک کے ڈائرکٹر سے بھی درخواست کی کہ وہ فوری طور پر ایسی قابل اعتراض اور اشتعال انگیز پوسٹنگ کو فیس بُک سے ہٹا دے ۔ قائد ایم بی ٹی نے دبیر پورہ پولیس سے شکایت درج کرانے کے بعد ڈی ایس پی ساوتھ زون اور کشمیر پولیس سے بھی مسئلہ کو رجوع کردیا۔

TOPPOPULARRECENT