Wednesday , January 24 2018
Home / Top Stories / چارہ اسکام : لالو پرساد کو 3.5 سال کی سزائے قید

چارہ اسکام : لالو پرساد کو 3.5 سال کی سزائے قید

رانچی ۔ 6 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) سی بی آئی کی ایک خصوصی عدالت نے بہار کے سابق چیف منسٹر لالو پرساد کو چارہ اسکام کے ایک مقدمہ میں 3.5 سال کی قید اور جملہ 10 لاکھ روپئے کا جرمانے کی سزا سنائی ہے ۔ اس عدالت نے لالو کو دیگر 10 افراد کے ساتھ دھوکہ دہی اور مجرمانہ سازش کے الزامات پر ہندوستانی تعزیری ضابطہ اور قانون انسداد رشوت ستانی کی مختلف دفعات کے تحت جرم کا مرتکب قرار دیا ہے ۔ 69 سالہ لالو پرساد کو سی بی آئی کورٹ جج شیو پال سنگھ نے سزا سنائی۔ یہ دوسری مرتبہ ہے کہ انھیں چارہ اسکام میں سزائے قید ہوئی ہے۔ جج نے لالو کو جملہ دس لاکھ روپئے کا جرمانہ بھی عائد کیا ہے۔ انھیں قانون انسداد رشوت ستانی کے تحت کیس میں بھی یکساں ساڑھے تین سال کی سزائے قید سنائی گئی ہے۔ دونوں معاملوں میں 5، 5 لاکھ روپئے کا جرمانہ عائد کیا گیا ہے۔ سی بی آئی کونسل
راکیش پرساد نے کہا کہ جرمانہ کی ادائیگی میں ناکامی پر مزید چھ ماہ قید ہوگی۔ یہ سزائیں ایک ساتھ چلیں گی۔ لالو موجودہ طور پر برسا منڈا سنٹرل جیل میں بند ہیں۔ قانونی ماہرین کے مطابق تین سال سے کم مدت کی سزا کی صورت میں لالو پرساد فوری طور پر تحت کی عدالت میں درخواست ضمانت دائر کرسکتے تھے۔ لالو اور دیگر افراد پر الزام رہا کہ انہوں نے 1992ء اور 1994ء کے دوران جب وہ بہار کے چیف منسٹر تھے دیوگڑھ ٹریژری سے
89.27 لاکھ روپئے کی رقم نکالی تھی ۔ قبل ازیں انہیں چائباسہ ٹریژری سے دھوکہ دہی کے ذریعہ 33.61 کروڑ روپئے کی رقم نکالنے سے متعلق ایک مقدمہ میں پانچ سال کی سزائے قید دی گئی تھی۔ لالو کے خلاف چارہ اسکام کے دیگر تین مقدمات زیرسماعت ہیں ۔ ان پر ڈومکا ٹریژری سے 3.97 کروڑ روپئے، چائباسہ ٹریژری سے 36 کروڑ روپئے اور دورانڈا ٹریژری سے 184 کروڑ روپئے نکالنے کے الزامات ہیں ۔ پٹنہ صدر پردیش کانگریس کمیٹی کوکب قادری نے آج ادعا کیا کہ چارہ اسکام کے ایک اور کیس میں لالو پرساد کو سزا کے باوجود ریاست بہار میں آر جے ڈی کے ساتھ پارٹی کے روابط متاثر نہیں ہوں گے۔

TOPPOPULARRECENT