Wednesday , December 19 2018

چارہ اسکام : لالو پرساد کیخلاف سزا کا فیصلہ موخر

آج کمرۂ عدالت میں ویڈیو کانفرنس کے ذریعہ سزا کا اعلان
رانچی۔ 4 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) ’’چارہ اسکام‘‘ میں خصوصی عدالت نے لالو پرساد یادو کو سزا سنانے کے فیصلہ کو کل تک کے لئے موخر کردیا۔ جج کو آر جے ڈی سربراہ کے بہی خواہوں کی جانب سے فون کالس بھی موصول ہوئے۔ جج کا کہنا ہے کہ انہیں فون کالس بھی ملے ہیں، اب وہ کل اپنے فیصلہ کا اعلان یا تو ویڈیو کانفرنس کے ذریعہ کریں گے یا پھر کمرہ عدالت میں اعلان کریں گے۔ یہ کیس 21 سال قبل کا ہے جب دیوگڑھ ٹریژری سے 89.27 لاکھ روپئے دھوکہ دہی سے نکال لئے گئے تھے۔ اس کیس کے سلسلے میں سزا سنانے کا فیصلہ دوسرے دن بھی ملتوی کردیا گیا۔ سی بی آئی جج شیوپال سنگھ نے کہا کہ وہ کل یہ فیصلہ کریں گے کہ آیا سزا کا اعلان ویڈیو کانفرنس کے ذریعہ کیا جائے یا عدالت میں سنایا جائے۔ اس پر لالو پرساد نے کہا کہ وہ شخصی طور پر حاضر ہوں گے اور انہوں نے تیقن دیا کہ کمرۂ عدالت میں ان کے حامیوں کی جانب سے کوئی نعرہ بازی نہیں ہوگی۔ جج نے یہ بھی کہا کہ انہیں آر جے ڈی سربراہ کے بہی خواہوں کی جانب سے فون کالس موصول ہوئے ہیں اور کہا گیا کہ چارہ اسکام کیس کو چھوڑ دیا جائے۔ چارہ اسکام میں ماخوذ دیگر 15 افراد بھی کمرۂ عدالت میں لالو پرساد یادو کے ساتھ جج کے فیصلہ کی سماعت کا انتظار کررہے تھے جبکہ آر جے ڈی سربراہ کو جج کی جانب سے فیصلہ موخر کئے جانے کے بعد برسانندا جیل لے جایا گیا۔ عدالت نے کل آر جے ڈی کے کانگریس کے سینئر قائدین کے حکومت تحقیر عدالت کی نوٹس جاری کی تھی جنہوں نے چارہ اسکام کیس میں لالو پرساد یادو کو ماخوذ کرنے پر 23 ڈسمبر کو ٹی وی چیانلوں پر عدالت پر قبضہ کی تھی۔ عدالت نے 23 ڈسمبر کو لالو پرساد یادو اور دیگر 15 کو چارہ اسکام میں ماخوذ کیا تھا اور دیگر 6 کو بری کردیا تھا جس میں سابق چیف منسٹر بہار جگناتھ مشرا بھی رہا ہوئے ہیں۔ عدالت نے لالو پرساد یادو کے خلاف دھوکہ دہی اور مجرمانہ سازش کے الزامات کے تحت مقدمہ چلایا ہے۔ اس طرح قانونی دفعات کے تحت لالو پرساد یادو کو کم سے کم ایک سال کی سزا اور زیادہ سے زیادہ 7 سال کی سزا ہوسکتی ہے۔

TOPPOPULARRECENT