Wednesday , May 23 2018
Home / Top Stories / چار ریاستوں میں اپوزیشن کا تشکیل حکومت کا دعویٰ

چار ریاستوں میں اپوزیشن کا تشکیل حکومت کا دعویٰ

BENGALURU, MAY 15 (UNI)- Congress and JD(S) MLAs staging protest against Karnataka Governor Vajubhai Vala, at Gandhi Statue at Vidhana Soudha in Bengaluru on Thursday. also seen in the photo are former Karnataka Chief Minister Siddarmaiah, former Prime Minister H D Devegowda, senior Congress leader Gulam Nabi Azad and Lok Sabha Leader of Opposition Mallikarjun Kharge. UNI PHOTO-33u

… ملک میں دستوری بحران …
نئی دہلی۔17 مئی (سیاست ڈاٹ کام) گورنر کرناٹک وجوبھائی والا کی ریاست میں بی جے پی کو نئی حکومت تشکیل دینے کی دعوت کے صرف ایک دن بعد اپوزیشن پارٹیوں نے چار دیگر ریاستوں گوا، بہار، میگھالیہ اور منی پور کے گورنروں سے مطالبہ کیا ہے کہ انہیں تشکیل حکومت کی دعوت دی جائے کیونکہ وہ گزشتہ اسمبلی انتخابات میں ان ریاستوں میں واحد سب سے بڑی پارٹی بن کر ابھری تھیں۔ کانگریس نے اعلان کیا ہے کہ وہ گورنر گوا مریدولا سنہا سے ملاقات کرکے ان کی پارٹی کو تشکیل حکومت کا دعویٰ پیش کرے گی۔ آر جے ڈی لیڈر تیجسوی یادو نے بھی گورنر بہار ستیہ پال ملک سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ اسمبلی تحلیل کردیں اور ان کی پارٹی کو ریاست میں تشکیل حکومت کی دعوت دیں۔ مزید دو ریاستوں کی اپوزیشن پارٹیوں نے بھی تشکیل حکومت انھیں مدعو کرنے کا مطالبہ کیا ہے ۔ منی پور کے سابق چیف منسٹر اوکرام ابوبی سنگھ اور میگھالیہ کے سابق چیف منسٹر مکل سنگما نے اپنی اپنی ریاست کے گورنر سے کل ملاقات کا وقت طلب کیا ہے۔ گوا کے 2017 اسمبلی انتخابات میں کانگریس 40 رکنی اسمبلی میں 21 نشستوں کے ساتھ بڑی پارٹی تھی۔ تاہم بی جے پی مابعد انتخابی اتحاد کے ذریعہ ریاست میں حکومت تشکیل دینے میں کامیاب ہوئی۔ بہار میں آر جے ڈی بھی 243 رکنی اسمبلی میں 2015 انتخابات میں 80 نشستیں حاصل کرکے واحد بڑی پارٹی بنی لیکن اسے اپوزیشن کی حیثیت دی گئی ہے۔ منی پور اسمبلی انتخابات میں کانگریس کو اکثریت حاصل کرنے صرف تین نشستیں کم تھیں۔ 60 نشستی اسمبلی میں اسے 28 نشستیں حاصل ہوئی تھیں لیکن 21 رکنی بی جے پی نے نیشنل پیپلز پارٹی (4 نشستیں)، ناگا پیپلز فرنٹ (4) اور لوک جن شکتی پارٹی (1) کے ساتھ اتحاد کرکے ریاست میں پہلی بی جے پی حکومت تشکیل دے دی۔ میگھالیہ میں کانگریس 21 نشستوں کے ساتھ سب سے بڑی پارٹی رہی۔ نیشنل پیپلز پارٹی 19 نشستوں کے ساتھ دوسرے مقام پرآئی۔ یہ 2017ء کے اسمبلی انتخابی نتائج ہیں۔ این پی پی کے پونراڈ سنگما نے 34 ارکان اسمبلی کی تائید سے حکومت تشکیل دی۔ کانگریس کے گوا انچارج چیلا کمار نے کہا کہ مزید قائدین گورنر سے ملاقات کرکے خواہش کریں گے کہ ان کی پارٹی کو تشکیل حکومت کی دعوت دیں۔ یہ کرناٹک میں پیش آنے والے واقعات کے پس منظر میں واضح طور پر اپوزیشن اتحاد کا مظاہرہ ہے۔ یوں چار ریاستوں میں ایک دستوری بحران پیدا ہوگیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT