Wednesday , November 14 2018
Home / سیاسیات / چار پارٹیاں بیک وقت انتخابات کی حامی، بی جے پی ، کانگریس خاموش

چار پارٹیاں بیک وقت انتخابات کی حامی، بی جے پی ، کانگریس خاموش

نئی دہلی ۔ /8 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) لوک سبھا اور انتخابات کو بیک وقت منعقد کرانے کے مسئلہ پر سیاسی پارٹیوں میں پھوٹ پڑگئی ہے ۔ 4 سیاسی پارٹیوں نے بیک وقت انتخابات کی حمایت کی ہے جبکہ 9 پارٹیوں نے ایسے انتخابات کی مخالفت کی ۔ حکمراں پارٹی بی جے پی اور اصل اپوزیشن کانگریس اس مسئلہ پر خاموش دکھائی دے رہی ہے ۔ اس موضوع پر لا کمیشن کی جانب سے منعقدہ مشاورتی اجلاس سے دونوں پارٹیاں دور رہیں ۔ بیک وقت انتخابات پر دو روز سے جاری مشاورت کے اختتام پر این ڈی اے کی حلیف پارٹی شرومنی اکالی دل ، انا ڈی ایم کے ، سماج وادی پارٹی اور تلنگانہ راشٹریہ سمیتی نے بیک وقت انتخابات کرانے کے نظریہ کی حمایت کی ۔ تاہم بی جے پی کی حلیف گوا فارورڈ پارٹی نے اس نظریہ کی مخالفت کی ۔ جیسا کہ ترنمول کانگریس ، عام آدمی پارٹی ، ڈی ایم کے ، تلگودیشم پارٹی ، سی پی آئی ، سی پی آئی ایم ، فارورڈ بلاک اور جنتادل ایس نے بھی مخالفت کی ہے ۔ سماج وادی پارٹی ، ٹی آر ایس ، عام آدمی پارٹی ، جنتادل ایس ، ڈی ایم کے ، ٹی ڈی پی نے لاء کمیشن کے اجلاس میں شرکت کی اور اپنے خیالات سے واقف کروایا ۔ بی جے پی اور کانگریس نے شرکت نہیں کی اور اس مسئلہ پر خاموشی کا مظاہرہ کیا ۔ 2019 ء میں بیک وقت انتخابات کروائے جاتے ہیں تو اترپردیش میں بی جے پی کی حکومت کی مدت مختصر ہوجائے گی ۔ کانگریس نے کہا کہ وہ دیگر اپوزیشن پارٹیوں سے مشاورت کرنے کے بعد اپنا ذہن بنائے گی ۔ بی جے پی نے ابتداء میں اس تجویز کی حمایت کی تھی لیکن اب لاء کمیشن سے وقت مانگا ہے تاکہ وہ اپنی رائے پیش کرسکے ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT