Wednesday , November 22 2017
Home / جرائم و حادثات / چندرائن گٹہ حملہ کیس، ایک گواہ دوبارہ حاضر عدالت

چندرائن گٹہ حملہ کیس، ایک گواہ دوبارہ حاضر عدالت

حیدرآباد /20 اپریل ( سیاست نیوز ) چندرائن گٹہ حملہ کیس کی سماعت آج بھی جاری رہی اور میٹرو پولیٹن سیشن جج کی ہدایت پر آج ایک گواہ دوبارہ حاضر عدالت ہوکر اپنا بیان قلمبند کروایا ۔ سب انسپکٹر سی سی ایس مسٹر شنکر نے اپنے بیان میں بتایا کہ انہوں نے ڈپٹی کمشنر پولیس ڈیٹکٹیو ڈپارٹمنٹ ستیہ نارائنا کی ہدایت پر چندرائن گٹہ حملہ واقع کا دوبارہ مقدمہ درج کرتے ہوئے ایف آئی آر درج کیا گیا اور اس ایف آئی آر کی کاپی کو 12 ویں ایڈیشنل چیف میٹروپولیٹن مجسٹریٹ کورٹ کو روانہ کیا تھا ۔ وکیل دفاع ایڈوکیٹ جی گرومورتی نے سب انسپکٹر کے بیان پر اعتراض کرتے ہوئے کہا کہ محض ایف آئی آر کی زیراکس کاپی عدالت کو روانہ کی گئی تھی جس پر ڈی سی پی کی کوئی دستخط یا اسٹامپ موجود نہیں تھا ۔ گواہ نے عدالت کو مزید بتایا کہ چندرائن گٹہ پولیس اسٹیشن میں درج کئے گئے ایف آئی آر کاپی پر متعلقہ میٹرو پولیٹن مجسٹریٹ کا کوئی اسٹامپ یا دستخط موجود نہیں ہے ۔ گواہ نے بتایا کہ اسے یہ یاد نہیں کہ اس نے چندائن گٹہ حملہ کیس کی ایف آئی آر کاپی اے سی پی سی سی ایس یا اسکے رائٹر کے حوالے کی ۔ گواہ نے بتایا کہ سی سی ایس میں چندرائن گٹہ حملہ کیس کا مقدمہ درج کرنے کے بعد اندرون تین گھنٹے ایف آئی آر کاپی کو متعلقہ مجسٹریٹ کو روانہ کردی گئی تھی ۔ وکیل دفاع نے یہ دعوی کیا کہ عدالت میں موجود گواہ استغاسہ کی کمزوریوں کو پر کر رہے ہیں اور عدالت میں جھوٹا بیان دے رہے ہیں ۔ جج نے اس کیس کی سماعت 24 اپریل تک ملتوی کردی اور آئندہ سماعت میں ڈاکٹر سلیم جو اس کیس کے گواہ کا بیان قلمبند کیا جائے گا ۔

TOPPOPULARRECENT