Tuesday , December 12 2017
Home / شہر کی خبریں / چندرا بابو اور کے سی آر مرکزی حکومت پر الزامات عائد کرنے کے عادی

چندرا بابو اور کے سی آر مرکزی حکومت پر الزامات عائد کرنے کے عادی

اننت پور میں قومی سی پی آئی سکریٹری ڈاکٹر کے نارائنا کی پریس کانفرنس
حیدرآباد۔/22اکٹوبر، ( سیاست نیوز) قومی سی پی آئی سکریٹری ڈاکٹر کے نارائنا نے دونوں تلگو ریاستوں کے چیف منسٹروں مسرس کے چندر شیکھر راؤ اور این چندرا بابو نائیڈو کو ہدف ملامت بنایا اور کہا کہ دونوں تلگو ریاستوں کے چیف منسٹر مرکز کے روبرو اپنا سر جھکاکر اور ریاست کواپنی واپسی کے بعد اپنے سے ناانصافی ہونے کا مرکزی حکومت پر الزام عائد کرنے کے عادی ہوگئے ہیں۔ آج اننت پور ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹر پر اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے ڈاکٹر کے نارائنا نے چیف منسٹر آندھرا پردیش کو اپنی سخت تنقید کا نشانہ بنایا اور کہا کہ سال 2019 تک پولاورم پراجکٹ کو مکمل کرنے سے متعلق حکومت بشمول مسٹر چندرا بابو نائیڈو کی جانب سے کی جانے والی باتیں عملی اعتبار سے ہرگز ممکن نہیں ہے۔ کیونکہ پولاورم پراجکٹ کے متاثرین کے ساتھ انصاف کئے بغیر پولاورم پراجکٹ کس طرح تعمیر کیا جائے گا؟ انہوں نے کہا کہ پولاورم پراجکٹ کی تکمیل کیلئے ہم تمام مکمل جذبہ و ایثار و قربانی کے ساتھ جدوجہد کرنے پر ریاست کی ترقی میں رکاوٹ پیدا کرنے برسراقتدار تلگودیشم پارٹی قائدین انہیں ( سی پی آئی کو ) تنقید کا نشانہ بنانا کوئی مناسب بات نہیں ہے۔ اس موقع پر موجود سکریٹری سی پی آئی آندھرا پردیش کمیٹی مسٹر راما کرشنا نے بھی اپنا اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ محض سرمایہ کاری کے حصول کیلئے ہی بیرونی دورہ کرنے کی بات کرنے والے چیف منسٹر مسٹر این چندرا بابو نائیڈو سے مطالبہ کیا کہ اب تک کتنی سرمایہ کاری حاصل کی گئی، مکمل تفصیلات پر مبنی فی الفور ’’ وائیٹ پیپر ‘‘ جاری کیا جائے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ریاست آندھرا پردیش میں مختلف مقامات پر کارپوریٹ تعلیمی اداروں میں مسلسل جاری طلباء کے خودکشی واقعات کا تدارک کرنے کیلئے فروغ انسانی وسائل کے وزارتی عہدہ سے مسٹر جی سرینواس راؤ کو علحدہ کیا جانا چاہیئے تاکہ ریاستی عوام میں ایک بار پھر نیا اعتماد پیدا کیا جاسکے۔

TOPPOPULARRECENT