Saturday , December 15 2018

چندرا بابو نائیڈو حیدرآباد میں صرف مہمان !

حیدرآباد ۔ 11 ۔ فروری(سیاست نیوز) وزیر انفارمیشن ٹکنالوجی کے ٹی راما راؤ نے ریمارک کیا کہ چیف منسٹر آندھراپردیش چندرا بابو نائیڈو حیدرآباد میں صرف ایک مہمان کی حیثیت رکھتے ہیں۔ اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کے ٹی آر نے کہا کہ ریاست کی تقسیم کے بعد چندرا بابو نائیڈو کا تلنگانہ پر کوئی حق نہیں اور وہ حیدرآباد میں بیٹھ کر آندھرا

حیدرآباد ۔ 11 ۔ فروری(سیاست نیوز) وزیر انفارمیشن ٹکنالوجی کے ٹی راما راؤ نے ریمارک کیا کہ چیف منسٹر آندھراپردیش چندرا بابو نائیڈو حیدرآباد میں صرف ایک مہمان کی حیثیت رکھتے ہیں۔ اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کے ٹی آر نے کہا کہ ریاست کی تقسیم کے بعد چندرا بابو نائیڈو کا تلنگانہ پر کوئی حق نہیں اور وہ حیدرآباد میں بیٹھ کر آندھراپردیش پر حکمرانی کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ تلنگانہ حکومت کے نزدیک چندرا بابو نائیڈو دیگر ریاستوں کے چیف منسٹرس کی طرح ہیں۔ ان کے تلنگانہ آنے اور جانے سے کوئی فرق نہیں پڑے گا۔ جس طرح دیگر ریاستوں کے چیف منسٹرس تلنگانہ کا دورہ کرتے ہیں، اسی طرح چندرا بابو نائیڈو بھی دورہ کرنے کا حق رکھتے ہیں۔ کے ٹی راما راؤ نے چندرا بابو نائیڈو کے اس بیان پر شدید ردعمل کا اظہار کیا جس میں انہوں نے کہا کہ حیدرآباد میں بیٹھ کر آندھراپردیش حکومت چلانا ایسا ہی ہے جیسے پڑوسی ملک میں بیٹھ کر حکومت چلانا ۔ انہوں نے نائیڈو کو مشورہ دیا کہ وہ تلگو دیشم پارٹی کا نام تبدیل کرتے ہوئے پی ڈی پی رکھ لیں جس کا مفہوم ’’پکا دیشم پارٹی‘‘ ہوگا۔ اردو زبان میں اسے پڑوسی ملک کی پارٹی کہا جاسکتا ہے۔

کے ٹی آر نے کہا کہ چندرا بابو نائیڈو کو تلنگانہ حکومت پر تنقید کا کوئی حق حاصل نہیں ہے۔ ورنگل سے امکانی دورہ کا حوالہ دیتے ہوئے کے ٹی آر نے کہا کہ چندرا بابو نائیڈو کے تلنگانہ دورہ سے حکومت اور ٹی آر ایس کو کوئی فرق نہیں پڑے گا۔ انہوں نے کہا کہ اس دورہ کے موقع پر چندرا بابو نائیڈو کو چاہئے کہ وہ تلنگانہ کے حقوق کے بارے میں وضاحت کریں۔ انہوں نے کہا کہ چندرا بابو نائیڈو جس طرح برقی اور پانی کے شعبہ میں تلنگانہ کے ساتھ ناانصافی کر رہے ہیں، عوام سے اس کی وضاحت کرنی ہوگی۔ آندھراپردیش تنظیم جدید بل 2014 ء میں برقی اور پانی کے شعبہ میں تلنگانہ کو جو حصہ داری دی گئی ، اس کی آندھراپردیش حکومت مخالفت کر رہی ہے۔ لہذا تلنگانہ کے دورہ کے موقع پر چندرا بابو نائیڈو کو اس کی وضاحت کرنی ہوگی ۔ عوام بھی ناانصافیوں کے بارے میں ان سے سوال کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ تلگو دیشم پارٹی کو تلنگانہ عوام نے مسترد کردیا ہے۔ لہذا تلنگانہ میں اس کے دوبارہ مستحکم ہونے کا کوئی امکان نہیں۔ صرف ٹی آر ایس کیلئے ہی عوام کے دلوں میں مقام ہے کیونکہ وہ وعدہ کے مطابق فلاحی اور ترقیاتی اسکیمات پر عمل کر رہی ہے۔

TOPPOPULARRECENT