Saturday , December 15 2018

چندرا بابو نائیڈو پر عائد کردہ الزامات کی مذمت : تلنگانہ سی پی آئی کمیٹی

حیدرآباد ۔ 11 ۔ جون : ( سیاست نیوز ) : تلنگانہ سی پی آئی کمیٹی نے چیف منسٹر آندھرا پردیش مسٹر این چندرا بابو نائیڈو پر ’ نوٹ کے عوض ووٹ معاملہ میں ملوث پائے جانے کے عائد کردہ الزامات کی سخت مذمت کی اور چیف منسٹر آندھرا پردیش مسٹر چندرا بابو نائیڈو سے ان پر عائد کردہ الزامات کی وضاحت کرتے ہوئے جواب دینے کا پر زور مطالبہ کیا ۔ آج یہاں اخبا

حیدرآباد ۔ 11 ۔ جون : ( سیاست نیوز ) : تلنگانہ سی پی آئی کمیٹی نے چیف منسٹر آندھرا پردیش مسٹر این چندرا بابو نائیڈو پر ’ نوٹ کے عوض ووٹ معاملہ میں ملوث پائے جانے کے عائد کردہ الزامات کی سخت مذمت کی اور چیف منسٹر آندھرا پردیش مسٹر چندرا بابو نائیڈو سے ان پر عائد کردہ الزامات کی وضاحت کرتے ہوئے جواب دینے کا پر زور مطالبہ کیا ۔ آج یہاں اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے مسٹر سی ایچ وینکٹ ریڈی سکریٹری سی پی آئی تلنگانہ اسٹیٹ کمیٹی نے یہ بات کہی اور بتایا کہ مسٹر چندرا بابو نائیڈو جب تک نوٹ کے عوض ووٹ معاملہ میں اپنے آپ کو بے قصور ثابت نہیں کرلیں گے تب تک وہ لاکھ کوششیں کرلینے کے باوجود انہیں بہر صورت چیف منسٹر عہدے سے استعفیٰ دینے کے سواء کوئی اور متبادل نہیں ہے ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت تلنگانہ بالخصوص چیف منسٹر مسٹر کے چندر شیکھر راؤ ایک طرف چیف منسٹر آندھرا پردیش سے استعفیٰ دینے کا مطالبہ کررہے ہیں تو دوسری طرف تلگو دیشم پارٹی سے انحراف کر کے کوئی استعفیٰ دئیے بغیر تلنگانہ ریاستی کابینہ میں شامل کئے گئے وزیر کمرشیل ٹیکسیس مسٹر ٹی سرینواس یادو کو کابینہ میں برقرار رکھنا کہاں تک منصفانہ اقدام ہے ۔ مسٹر سی ایچ وینکٹ ریڈی سکریٹری سی پی آئی نے چیف منسٹر مسٹر کے چندر شیکھر راؤ سے دریافت کیا کہ آخر مسٹر ٹی سرینواس یادو کو تلگو دیشم پارٹی رکن اسمبلی کی حیثیت سے مستعفی نہ کروا کر کابینہ میں کس بنیاد پر شامل کیا اور ابھی تک اسمبلی رکنیت سے استعفیٰ کیوں پیش نہیں کروایا گیا ۔ انہوں نے اسپیکر قانون ساز اسمبلی تلنگانہ مسٹر مدھوسدن چاری سے دیگر پارٹیوں سے انحراف کر کے برسر اقتدار پارٹی ٹی آر ایس میں شمولیت اختیار کرنے والے ارکان اسمبلی کے خلاف فی الفور کارروائی کرنے کا پر زور مطالبہ کیا ۔۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT